Society, weaker class, PM Imran Khan, PTI government, Sugar mafia
21 اپریل 2021 (13:33) 2021-04-21

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ جو معاشرہ کمزور طبقے کا دھیان نہیں رکھ سکتا وہ اوپر نہیں گیا ۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ پورے ملک میں نیا پاکستان ہاؤسنگ منصوبہ شروع کیا ہے ۔ ہاؤسنگ منصوبے میں دیر اس لیے ہوئی کہ بینک قرضے دینے کو تیار نہیں تھے ۔ انہوں نے کہا کہ ہر گھر پر تین لاکھ روپے سبسڈی دے رہے ہیں ۔ گھر کے قرضے پر صرف تین فیصد سود دینا پڑے گا ۔ ہم نے پوری کوشش کی ہے سرکاری زمین پر سستے گھر بنیں ۔

وزیراعظم نے کہا کہ جلوزئی میں منصوبے سے کم آمدنی والے طبقے کو گھر میسر آسکے گا ۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم جونیجو کی اسکیم اس لیے ناکام ہوئی کہ وہاں لوگ رہنا ہی نہیں چاہتے تھے ۔

عمران خان نے کہا کہ شوگر مافیا مہنگی چینی بیچ کر پیسے بناتی ہے ، چینی مافیا ٹیکس نہیں دیتی ۔ یہ چوری کریں ، ڈاکا ڈالیں ، منی لانڈرنگ کریں پھر بھی انھیں قانون کے نیچے نہ لایا جائے ۔ اُن کیخلاف ایکشن لیں تو وہ کہتے ہیں خاص لوگ ہیں ، ساری جگہ ایسے مافیا بیٹھے ہیں ۔

انہوں نے کہا کہ یہاں طاقتور قانون کے نیچے نہیں آنا چاہتے اس لیے پی ڈی ایم جیسے الائنس بنائے جاتے ہیں ۔ بنانا ری پبلک میں طاقتور کیلئے الگ قانون ہوتا ہے ۔

وزیراعظم نے کہا کہ کمزور اور طاقتور کے لئے ایک ہی قانون ہونا چاہیے ، قانون کی بالادستی کا مطلب ہے کہ طاقتور کو قانون کے نیچے لانا ۔ پاکستان میں لوگوں کو قانون کی بالادستی کی سمجھ نہیں آرہی ۔

انہوں نے کہا کہ صحت کارڈ سے ہیلتھ سیکٹر میں انقلاب آئے گا ، امیر ممالک بھی ہیلتھ انشورنس نہیں دے سکتے ۔


ای پیپر