نواز شریف کی غلطیاں
21 اپریل 2018 2018-04-21

نواز شریف نے اپنے سیاسی دور میں مسلسل کچھ ایسی فاش غلطیاں کی ہیں جن کی وجہ سے انہیں سزا دینی بنتی ہے۔ اور آج وہ جن مشکلات سے گزر رہے ہیں۔ وہ ان کی اپنی انہی غلطیوں کی وجہ سے ہے۔ پہلے ہم ان غلطیوں بلکہ بلنڈرز کو گن لیں۔ پھر ایک ایک کرکے ان کا تجزیہ کریں گے۔ اور آخر میں یہ نتیجہ نکالنے کی کوشش کریں گے کہ اب انہیں کرنا کیا چاہیے یا کیا ہونے کے امکانات ہیں۔ ہمارے یہ کالم پاکستان کے ماضی اور حال کی سیاسی تاریخ کو زیر بحث لائیں گے۔ چلیں آئیں ان کے بلنڈرز کو گنتے ہیں۔
1۔ خارجہ پالیسی کی تبدیلی
2۔ شنگھائی کانفرنس میں شمولیت
3۔ امریکہ سے دوری
4۔ بھارت کے ساتھ دوستی کی خواہش
5۔ افغان پالیسی پر کنٹرول حاصل کرنے کی کوشش
6۔ سعودی عرب فوج بھیجنے سے انکار
7۔ ایران کے ساتھ تعلقات کی بحالی
8۔ طالبان کے خلاف آپریشن اور امن کا قیام
9۔ اسٹیبلشمنٹ کے اختیارات کو چیلنج
10۔ بلوچستان میں سپیس یعنی جگہ بنانے کی کوشش
11۔ سندھ ، کے پی کے ، بلوچستان اور پنجاب میں اپنی مرضی کے اور سویلین گورنر
12۔اہم ممالک میں اپنی مرضی کے سفیر
13۔سی پیک کا آغاز
14۔معاشی ترقی کا آغاز
15۔فوج کو اپنی مرضی کا بجٹ دینے پر انکار
16۔سوشل اور معاشی اور فوجی بجٹ کی مساوی تقسیم پر اصرار
17۔سی پیک کے ٹھیکوں کی سول اور خاکی تقسیم پر جھگڑا
18۔سی پیک کا کریڈٹ لینے پر اصرار
19۔سی پیک کے معاشی فوائد سمیٹنے پر اختلاف
20۔جی ایچ کیو کی اسلام آباد منتقلی پر اختلاف
21۔پلاٹوں کی خریدو فروخت پر اسحاق ڈار کی نئی ٹیکس پالیسی
22۔آئین پر چلنے پر اصرار
23۔سول حکومتوں کی مدت پوری ہونے پر اصرار
24۔میڈیا اور عدلیہ کو فری ہینڈ
25سیاست کو تبدیل کرنے اور اسے اخلاقی اور جمہوری بنیاد پر چلانے کی خواہش اور اصرار اور اپنے ابتدائی ماضی کے خلاف چلنے کا اظہار ۔


ای پیپر