شیخ رشید کا ریلوے ٹریک کے قریب تمام سکولز بند کرنے کا حکم
20 اکتوبر 2018 (22:04) 2018-10-20

لاہور:وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید نے کہاہے کہ بچوں کو حادثات سے محفوظ رکھنے کیلئے ریلوے ٹریک کے قریب تمام سرکاری اور غیر سرکاری اسکولوں کو بند کر رہے ہیں‘ والدین بچوں کو دوسرے اسکولوں میں داخل کرادیںاور ٹریک پر کھیلنے والے بچوں کے والدین کو گرفتار کریں گے۔

ہفتہ کو ریلوے ہیڈ کوارٹرز میں پریس کانفر سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر ریلوے شیخ رشید نے کہا کہ جو بچے ریلوے ٹریک پر گھومتے ملیں گے‘ ان کے والدین کو گرفتار کیا جائیگا اور قانونی کاروائی کے مطابق سزا بھی دی جائیگی ۔انہوں نے کہا کہ چھوٹے بچوں کو خطرناک حادثات سے بچانے کیلئے ریلوے ٹریک کے قریب تمام سرکاری ،غیر سرکاری اور چھوٹے کاروباری مراکز کو بند کرنے کا حکم دیدیا ہے ۔ وزیر ریلوے نے کہا کہ سابقہ حکومتوں نے ملک کو جی بھر کر لوٹا ‘وزارت ریلوے کیساتھ بہت ظلم کیا گیا ہے ‘22کروڑ روپے کا انجن 42کروڑ روپے میں خریدا گیا ‘تاہم اب محکمے کی بہتری کیلئے تمام ممکنہ اقدامات اٹھائے جا رہے ہیں ‘جن میں شفافیت ہماری اولین ترجیح ہے ۔

انہو ں نے کہا کہ ایک ماہ کی کارکردگی میں وزارت ریلوے کی آمدن میں 1ارب روپے کا اضافہ ہوا ہے ‘ متعدد ٹرینوں کے اوقات مسافروں کے مطالبے پر تبدیل کیے گئے ہیں‘ لاہور سے اسلام آباد کیلئے ریل کار صبح8بجے کے بجائے 10بجے چلے گی‘ گرین لائن میں کیٹرنگ سروسز کو بحال کر رہے ہیں۔ شیخ رشید نے کہا کہ کراچی سے حیدر آباد کے درمیان شٹل ٹرین شروع کی جائےگی‘ مال بردار گاڑیوں کو فعال کرنے کیلئے خصوصی ٹیم تشکیل دےدی گئی ہے۔

شیخ رشید کا مزید کہنا تھا کہ نئے انجنوں میں جی پی ایس سسٹم موجود ہے‘ 30 اکتوبر سے گرین لائن ٹرین میں وائی فائی دستیاب ہوگا‘ وائی فائی کی سہولت صرف ریلوے مسافروں کیلئے ہے‘ ایک مہینے کے دوران100کوچز نظام میں لائیں گے۔انہوں نے کہا کہ ہمال گاڑی کیلئے ٹریکنگ سسٹم متعارف کروا رہے ہیں‘ کراچی دھابیجی اور کراچی حیدرآباد ٹرینوں کا جلد افتتاح کر دیا جائےگا جبکہ سکھر ایکسپریس اب جیکب آباد تک جائےگی‘ ریلوے میں میرٹ پر لوگوں کو بھرتی کیا جائےگا‘ کوشش کرینگے کہ ریلوے اپنے پاو¿ں پر کھڑی ہوجائے ۔


ای پیپر