فوٹو بشکریہ فیس بک

بھارت نے جارحیت کی تو ہم سب پاک فوج کیساتھ کھڑے ہوں گے: آصف زرداری
20 فروری 2019 (16:15) 2019-02-20

اسلام آباد: سابق صدر آصف علی زرداری نے کہا کہ ہنگامی حالات میں کشمیر کی صورتحال اہم ہے۔ بھارت نے جارحیت کی تو ہم سب پاک فوج کے ساتھ کھڑے ہوں گے۔

پریس کانفرنس کرتے ہوئے سابق صدر نے کہا کہ جب میں صدر تھا تو اس وقت ممبئی میں ہوٹل پر حملہ ہوا تھا، پاکستان نے سفارتی محاذ پر تاج محل ہوٹل معاملے کا مقدمہ لڑا تھا۔ نابالغ حکومت کو سمجھ نہیں آرہی، بیک سیٹ ڈرائیور سیاست نہیں سمجھتا۔ موجودہ حکومت کو عالمی سطح پر بہترین سفارتکاری کا مظاہرہ کرنا چاہیے۔ موجودہ حکومت کے آنے کے بعد پاکستان مزید تنہا ہو گیا۔

انہوں نے مزید کہا کہ سپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی کی گرفتاری کی مذمت کرتا ہوں، سراج درانی کو گرفتار کرنا تھا تو کراچی سے کرتے، اسلام آباد سے کیوں کیا؟ پارٹی رہنماؤں کی گرفتاریاں کوئی نئی بات نہیں، جب تک جرم ثابت نہ ہو کسی کو گرفتار نہیں کرنا چاہیے۔

آصف زرداری نے کہا کہ بلاول بینظیر کا بیٹا ہے، آپ اسے کیا ڈراؤ گے۔ جیل میرا دوسرا گھر ہے، ڈرنے کی بات نہیں۔ نیب کیسز کا مقابلہ کریں گے۔ سنا ہے کسی منگی صاحب کو لائے ہیں جو سندھیوں کو گرفتار کر رہے ہیں۔

سابق صدر نے کہا کہ سعودی بھائیوں کے دورے میں اپوزیشن کو دعوت نہیں دی گئی۔ حکومت نے اپنے ایک چارلی سے ٹویٹ کرا دیا کہ یہ آنے کے قابل نہیں۔ ہم چاہتے تھے کہ موجودہ حکومت چلے اور عوام کے مسائل حل کرے۔ حکومت کو 8 ماہ دے دیئے، اب مزید وقت نہیں دیں گے۔ آج بھی شفاف الیکشن ہوں تو نتائج مختلف ہوں گے۔

مولانا فضل الرحمان جہاں قدم رکھیں گے ان کے ساتھ چلیں گے۔ شہباز شریف کو ضمانت ہونے پر مبارک دیتا ہوں۔ سندھ حکومت کو ہٹانے کی غیر جمہوری کوشش ہے۔


ای پیپر