Talks between government and banned Tehreek-e-Labbaik Pakistan successful, Sheikh Rasheed announces
کیپشن:   فائل فوٹو
20 اپریل 2021 (07:23) 2021-04-20

لاہور: وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید احمد نے اعلان کیا ہے کہ حکومت کے کالعدم تحریک لبیک کی قیادت سے ہونے والے طویل مذاکرات بالاخر کامیابی سے ہمکنار ہو چکے ہیں۔

اس بات کا اعلان انہوں نے سوشل میڈیا پر جاری ایک ویڈیو بیان میں کیا۔ شیخ رشید کا کہنا تھا کہ کالعدم تحریک لبیک کیساتھ مذاکرات میں یہ طے پایا ہے کہ ملک میں دھرنوں کا سلسلہ ختم کیا جائے گا جبکہ آج اسمبلی میں فرانسیسی صدر کو ملک بدر کرنے کے حوالے سے قرارداد بھی پیش کی جائے گی۔

وفاقی وزیر داخلہ نے مذاکرات میں طے پانے والے نکات بتاتے ہوئے کہا کہ کالعدم تحریک لبیک کے کارکنوں اور قیادت پر درج مقدمات کو بھی ختم کرکے معاملات کو بات چیت سے آگے بڑھایا جائے گا۔

آج وزیر داخلہ ایک اہم پریس کانفرنس میں کالعدم ٹی ایل پی کیساتھ طے پانے والے معاملات سے قوم کو آگاہ کریں گے۔

خیال رہے کہ گزشتہ روز حکومت اور کالعدم تحریک لبیک کے درمیان طویل مذاکرات ہوئے جن میں اہم شخصیات جن میں گورنر پنجاب چودھری سرور، صوبائی وزیر داخلہ شیخ رشید، صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت، پولیس اور دیگر اداروں کے اعلیٰ حکام شریک ہوئے۔

تحریک لبیک کے رہنما شفیق امینی، ظہیر الحسن شاہ اور مجلس شوریٰ کے دیگر ارکان بھی اس اہم میٹنگ میں موجود تھے۔ موجود کالعدم تحریک لبیک اور حکومت کے درمیان مذاکرات میں اعتماد سازی کے اقدام کے طور پر کل ڈی ایس پی اور دیگر اہلکاروں کی بازیابی ممکن ہوئی تھی۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ کالعدم تحریک لبیک نے وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید اور فرانس کے سفیر کو ملک بدر کرنے، سعد رضوی اور کارکنوں کی فی الفور رہائی کا مطالبہ کیا گیا جسے سختی سے مسترد کر دیا گیا۔ اس دوران دونوں جانب تلخی بھی پیدا ہوئی۔

حکومتی ٹیم نے جاں بحق افراد کی تعداد کے دعوے کو تسلیم کرنے سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ کارکن تھوڑے مرے ہیں لیکن سوشل میڈیا پر اور تقریروں میں تعداد بڑھا چڑھا کر پیش کی جا رہی ہے، زرا مرنے والوں کی لاشیں تو دکھائیں۔


ای پیپر