وزیر اعظم کو سمجھ نہیں آرہی کہ کرنا کیا ہے : مریم اورنگزیب
19 ستمبر 2018 (13:44) 2018-09-19

اسلام آباد: پاکستان مسلم لیگ (ن) کی رہنما سابق وفاقی وزیر اطلاعات مریم اورنگزیب نے کہا ہے کہ و زیر اعظم عمران خان کوسمجھ نہیں آرہی کہہ وہ کنٹینر پر کھڑے ہیں یا وزیر اعظم ہاؤس میں، وزیر اعظم نے سعودی عرب کے دورے کے دوران اپنی اعلان کردہ کفایت شعاری مہم کی نفی کر دی ہے ، وزیر خزانہ کے پاس نئے ٹیکس لگانے کے علاوہ وزیر خزانہ کے پاس معاشی ترقی کا کوئی ا یجنڈا نہیں ہے ،انتخابات میں دھاندلی کے حوالے سے پارلیمانی کمیشن کا قیام خوش آئند ہے ۔

بدھ کو پارلیمنٹ ہاؤس کے باہر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پچھلے20دنوں سے تحریک انصاف کی حکومت کو سمجھ نہیں آرہی کہ وہ کنٹینر پر کھڑے ہیں یا حکومت کر رہے ہیں۔ وزیر اعظم کو بھی نہی پتہ کہ وہ کنٹینر پر کھڑے ہیں یا وزیر اعظم ہاؤس میں۔ عمران خان نے اعلان کیا تھا کہ وہ اور اس کی کابینہ کفایت شعاری کرتے ہوئے خصوصی طیارے کی بجائے عام جہاز پر سفر کریں گیلیکن انہوں نے سعودی عرب کے دورے کے دوران اپنی اعلان کردہ کفایت شعاری مہم کی نفی کر دی ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہم توقع کرتے ہیں کہ وزیر اعظم کا دورہ سعودی عرب کامیاب ہو لیکن دورے سے قبل وزیر اعظم ہاؤس کی کابینہ نے دورے کی تفصیلات پارلیمنٹ اور عوام کے سامنے نہیں رکھیں۔امریکی وزیر خارجہ کے دورہ پاکستان کے موقع پر وزارت خارجہ کا بیان کچھ اور اور امریکی وزارت خارجہ کا بیان کچھ اور تھا جس سے شکوک و شبہات بڑھے اوور عالمی سطح پر ملک کی جگ ہنسائی ہوئی۔

مریم اورنگزیب نے کہا کہ وزیر اعظم اور وزرا کو سوچ سمجھ کر بیانات دینے چاہییں۔گیس کی قیمتوں میں اضافہ مضحکہ خیز ہے اس سے ملک کے اندر مہنگائی کا نیا طوفان آئے گا۔چندے سے ڈیم نہیں بنتے اس کیلئے حکومت کو بجٹ میں فنڈ مختص کرنا ہوگا۔انتخابات میں دھاندلی کے حوالے سے پارلیمانی کمیشن کا قیام خوش آئند ہے ۔ اگر صحیح نیت سے کام کیا گیا تو دھاندلی بے نقاب ہوگی۔ آر ٹی ایس سسٹم کی ناکامی، فارم45کی گمشدگی اس کی تحقیقات کی جائیں گی۔ وزیر خزانہ اسد عمر گزشتہ5سال سے دعوے کرتے رہے کہ وہ مہنگائی کم کریں گے اور ان کے پاس واضح پلان موجود ہے لیکن ایک ماہ گزر جانے کے باوجود نئے ٹیکس لگانے کے علاوہ وزیر خزانہ کے پاس معاشی ترقی کا کوئی ا یجنڈا نہیں ہے ۔بھارتی نژاد کو پاکستان کے اندر50لاکھ گھروں کی تعمیر کا ٹھیکہ دیا جا رہا ہے ۔ دوہری شہریت کے لوگوں کو وزرا اور مشیر بنا دیا گیا ہے ۔ وزیر اعظم کا پہلا پالیسی خطاباس بات کا عکاس ہے کہ اس کے پاس کوئی وژن نہیں ہے ۔ پوری قوم کی نظریں قومی کرکٹ ٹیم پر ہیں۔ بھارت کے ساتھ مقابلے میں فتح کیلئے پوری قوم دعاگو ہے ۔


ای پیپر