New Cases,Global Epidemic,Important Meeting,Law Minister,Raja Basharat
19 نومبر 2020 (18:44) 2020-11-19

لاہور:صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت کی زیر صدارت وزیر اعلیٰ ہاؤس میں کابینہ کمیٹی برائے انسداد عالمی وبا کی روک تھام کے سلسلے میں اہم اجلاس ہوا ،جس میں صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد، صوبائی وزیر سکولزمراد راس، وزیر ہائیر ایجوکیشن راجہ یاسر ہمایوں،وزیر صنعت میاں اسلم اقبال نے شرکت کی ۔

صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت کا کہنا تھا اسلام آباد ہائی کورٹ کی جانب سے عالمی وبا  کے خلاف حکومتی اقدامات کی تائید خوش آئند ہے ، انہوں نے اجلاس کے اراکین سے خطاب کرتے ہوئے کہا پنجاب میں اسلام آباد ہائی کورٹ اور این سی او سی کی ہدایات کے مطابق لائحہ عمل مرتب کیا جائے،بالخصوص شادی ہالز کے حوالے سے دی گئی ہدایات پر سختی سے عملدرآمد کرایا جائے،اس موقع پر زیر صحت نے بتایا کہ 23 نومبر کے بعد تعلیمی ادارے بند کرنے کی تجویز ہے ،جبکہ وزیر ہائیر ایجوکیشن کی جانب سے صرف ہائی رسک تعلیمی ادارے بند کرنے کی تجویزبھی موجود ہے ۔

اس موقع پر وزیر تعلیم پنجاب مراد راس کا کہنا تھا کہ سکول بند کرنے کا فائدہ اس وقت ہو گا جب تفریحی مقامات کو بھی مکمل طور پر بند کیا جائے گا ،اس وقت پرائیویٹ سکولز وبا کے سلسلے میں بڑھتے کیسز پر درست معلومات فراہم نہیں کر رہے،صوبہ بھر میں  وبا کے نئے کیسز اور اموات کی شرح بتدریج بڑھ رہی ہے،پنجاب میں اس وقت نئے کیسز کی شرح 5 فیصد سے زائد ہے، یہ جون والی شرح کے برابر ہے۔

اجلاس میں بریفنگ کے دوران بتا یا گیا کہ سکولوں میں ٹیسٹ جاری ہیں ،مثبت کیسز میں مسلسل اضافہ ہو رہا ہے ،590 سے زائد نئے کیسز سامنے آ چکے ہیں ،وزیر قانون راجہ بشارت نے کہا شہر یوں سے درخواست ہے کہ ہر پبلک مقام پر ایس او پیز پر سختی سے عمل درآمد کریں ،اگر ہم نے آج احتیاط نہ کی تو مستقبل میں سب کچھ بند کرنا پڑے گا۔


ای پیپر