Chief Election Commissioner, people, Gilgit-Baltistan, government, Bilawal
کیپشن:   فائل فوٹو سورس:   
19 نومبر 2020 (15:57) 2020-11-19

اسلام آباد: چیئرمین پیپلز پارٹی بلاول بھٹو نے کہا کہ الیکشن کمشنر نے گلگت بلتستان کے عوام کو موجودہ حکومت کو فروخت کر دیا، چیف الیکشن کمشنر نے بڑی ڈھٹائی سے کہا الیکشن صاف اور شفاف تھے کوئی گڑبڑ نہیں ہوئی۔

بلاول نے چیف الیکشن کمشنر پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ چیف الیکشن کمشنر نے کہا تھا پولنگ میں کوئی دھاندلی نہیں ہوئی، ابھی تک کچھ علاقوں سے مکمل رزلٹ موصول نہیں ہوئے۔ پہلے ہی کہا تھا الیکشن کمیشن کا موجودہ حکومت سے مک مکا ہے۔ کچھ تصاویر نیٹ پر شیئر ہوئی ہیں جس میں الیکشن کمشنر وفاقی وزرا سے مل رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ فافن کی رپورٹ کے مطابق ہر پولنگ اسٹیشن پر 3 خلاف ورزیاں ہوئی ہیں، یہ الیکشن کمیشن نہیں بلکہ پی ٹی آئی کا الیکشن ونگ ہے۔ الیکشن کمشنر گلگت بلتستان نے اسلام آباد میں پریس کانفرنس کی، الیکشن کمشنر بتائیں انہوں نے کس کے کہنے پر پریس کانفرنس کی۔ الیکشن کمشنر نے خواتین کے ووٹ کے معاملے پر کوئی قدم نہیں اٹھایا۔

بلاول نے کہا کہ جب تک عوام کو حق حاکمیت نہیں دیں گے وہ آپ کو معاف نہیں کریں گے۔ اسلام آباد کی حکومت ایک، دو ماہ کی مہمان ہے۔

انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان کی خواتین کے ووٹوں کا تحفظ کریں گے، 7 ہزار خواتین رجسٹرڈ ہیں ان کا حق ہے ووٹ کاسٹ کریں۔ پیپلز پارٹی عوام کے حقوق پر سودے بازی نہیں کرسکتی، عوام کے حقوق کیلئے آواز بلند کرتے رہیں گے۔

چیئرمین پیپلز پارٹی نے کہا کہ 27 دسمبر کو جی بی 3 میں پولنگ ہوگی۔ گلگت بلتستان کے عوام نے پرویز مشرف دور میں بھی ہمارا ساتھ دیا تھا۔ پی ڈی ایم کے پلیٹ فارم سے جی بی کے عوام کے حقوق کے کیس پر بات کریں گے۔

بلاول نے کہا کہ گلگت بلتستان کے عوام کا شکرگزار ہوں کہ انہوں نے پیپلز پارٹی کو سب سے زیادہ ووٹ دیئے۔ عوام نے ووٹ کے تحفظ کی جدوجہد میں بھرپور ساتھ دیا۔ پیپلز پارٹی گلگت بلتستان کی سب سے مقبول جماعت ہے۔ گلگت بلتستان کے عوام نے بھٹو زندہ ہے کا ثبوت دیا ہے۔


ای پیپر