Trump, one year, campaign, election rigging, New York Times
کیپشن:   فائل فوٹو سورس:   
19 نومبر 2020 (10:06) 2020-11-19

نیویارک: الیکشن میں دھاندلی کا شور مچانے والے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے انتخابات کو متنازعہ بنانے کی بہت پہلے ہی پلاننگ کر رکھی تھی۔ امریکی اخبار نیویارک ٹائمز نے انکشاف کیا ہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ نے ایک سال سے الیکشن کو دھاندلی زدہ قرار دینے کی مہم چلا رکھی تھی۔

اخبار کی رپورٹ کے مطابق ٹرمپ نے ری پبلکن پارٹی رہنماؤں کو بھی الیکشن دھاندلی زدہ ہونے کے بے بنیاد دعوے پر قائل کیا، جس کے بعد مختلف ریاستوں میں ہزاروں ووٹ غیر رجسٹرڈ قرار دے کر ووٹنگ عمل سے باہر کر دیے گئے۔ بعد ازاں تحقیقات پر یہ دعوے غلط نکلے۔

ٹرمپ کے سینئر مشیروں نے بھی ووٹر فراڈ کے نعرے کو انتخاب میں ٹرمپ کی الیکشن میں کامیابی کے لیے اہم قرار دیا، اور اسی بیانیے کی الیکشن سے قبل بھرپور تشہیر کرتے رہے

لیکن امریکی عوام نے ٹرمپ کی ایک نہ سنی اور جو بائیڈن کو اپنا صدر منتخب کرلیا۔

واضح رہے کہ ڈونلڈ ٹرمپ کے شور کے بعد امریکا میں انتخابات میں دھاندلی کے واقعات پر سرکاری سطح پر تحقیقات شروع کر دی گئی ہے۔

تحقیقات کے بعد ٹرمپ کو ریاست الاسکا سے تو کامیابی ملی اور اُن کے ووٹوں میں بھی اضافہ ہوا لیکن 3 ووٹوں کے اضافے سے ٹرمپ جیت نہیں سکے ہیں۔

خیال رہے کہ امریکا میں ووٹوں کی گنتی مکمل ہونے کے بعد تمام ریاستوں کا غیر سرکاری نتیجہ جاری کر دیا گیا ہے جس کے مطابق ڈیموکریٹک پارٹی کے صدارتی امیدوار جوبائیڈن نے 306 الیکٹورل ووٹس کے ساتھ واضح کامیابی حاصل کر لی ہے جبکہ ڈونلڈ ٹرمپ صرف 232 ووٹ حاصل کر سکے ہیں۔ غیر سرکاری نتائج کے اعلان کے بعد ٹرمپ کے حامیوں کی جانب سے واشنگٹن میں پرتشدد مظاہرے شروع ہوگئے ہیں، پولیس نے 20 مظاہرین کو حراست میں لے کر اُن کے خلاف کارروائی شروع کر دی ہے۔


ای پیپر