نیب لاہور کا ہیڈ کوارٹر خوف اور دہشت کا مرکز بن چکا ‘ سعد رفیق
19 نومبر 2018 (23:18) 2018-11-19

لاہور: پاکستان مسلم لیگ(ن)کے رہنما خواجہ سعدرفیق نے کہا ہے کہ نیب لاہور کا ہیڈ کوارٹر خوف اور دہشت کا مرکز بن چکا ‘ نیب کا کالا قانون دورِآمریت کی نشانی ہے‘ اپنے دورِ میں قانون کے سقم دور نہ کرنا ہماری نالائقی تھی‘ زیرتفتیش اور زیرحراست افراد سے مرضی کے بیانات لینے کیلئے غیرانسانی اورغیرقانونی ہتھکنڈے استعمال کیے جاتے ہیں۔

گزشتہ روز میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے سابق وفاقی وزیر ریلوے خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ نیب کا کالا قانون دورِ آمریت کی نشانی ہے، اپنے دورِاقتدار میں اس قانون کے سقم دور نہ کرنا ہماری نالائقی تھی۔انہوں نے کہا کہ نیب کا کالا قانون دورِآمریت کی نشانی ہے‘ اپنے ادوار میں اس کے قانونی سقم دورنہ کرنا ہماری نالائقی تھی۔

خواجہ سعد رفیق نے کہا کہ نیب لاہور کا ہیڈ کوارٹر خوف اور دہشت کا مرکز بن چکا ہے، زیرتفتیش اور زیرحراست افراد سے مرضی کے بیانات لینے کے لیے غیرانسانی اورغیرقانونی ہتھکنڈے استعمال کیے جاتے ہیں‘ میرے خلاف بھی ثبوت اکٹھے کرنے اور گواہی حاصل کرنے کے لئے لوگوں پر جبر کیا گیا۔سابق وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ لاہورہائی کورٹ میں میری ضمانت کی منسوخی کی لئے نیب کا جواب کسی بھی دستاویزی ثبوت کے بغیر طوطا کہانی ہے، ڈی جی نیب لاپور نے قیصرامین بٹ کو وعدہ معاف گواہ بنانے کے لئے بہت دبا ڈالا اور جب انہوں نے انکار کیا تو ان کے وارنٹ گرفتاری جاری کردیئے گئے۔


ای پیپر