اسرائیل نے مسجد اقصیٰ کے قریب کھدائی شروع کردی

19 جولائی 2018 (12:45)


بیت المقدس : اسرائیل نے مقبوضہ بیت المقدس میں مسجد اقصیٰ کے قریب محلات امیہ کے اطراف پھر کھدائی شروع کردی ۔


تفصیلات کے مطابق اسرائیل کی طرف کھدائی محلات امیہ کے آس پاس شروع کر دی۔علاوہ ازیں اسرائیل نے شام سے آ نے والے پناہ گزینوں کو واپس بھیج دیا۔مفتی اعظم فلسطین نے خبردار کیا ہے کہ یہ سرگرمی مسجد اقصیٰ کو نقصان پہنچائے گی۔ مفتی اعظم کا انتباہ کر تے ہوئے کہا کہ اسرائیل کی طرف سے ہونے والی سرگرمیاں مسجد اقصیٰ کو نقصان پہنچا ئیں گی، کھدائی سے شہر کے خدوخال تبدیل کرنا بھی مقصد ہے۔امریکی ٹی وی کے مطابق 200 افراد کے لگ بھگ شامی پناہ گزین سفید کپڑے لہراتے ہو ئے سرحد کی طرف بین الاقوامی سطح پر حفاظت کا مطالبہ کرتے ہوئے آئے تھے۔


اسرائیل 4800افراد کی مرہم پٹی کر کے انہیں واپس شام بھیج چکا ہے، اسرائیل نے جولان پر 1967میں قبضہ کیا تھا۔اسرائیلی فوج نے انہیں قنطیرہ کیمپ کی طرف بھیج دیاجو شامی افواج کی زد میں آئے ہوئے شہریوں کے لیے مختص کیا گیا ۔ رپورٹ میں بتایا گیا کہ ایک اسکول میں پناہ لینے والے10شامی افراد پر مشتمل ایک خاندان کو بھی ہلاک کر دیا گیا ۔ٹی وی رپورٹ کے مطابق اسرائیل نے 4800افراد کی مرہم پٹی کر کے انہیں دوبارہ شام بھیج دیا ، یاد رہے کہ اسرائیل نے جولان پر 1967 میں قبضہ کیا تھا۔

مزیدخبریں