ملک بھر میں آٹے کا بحران شدید ہو گیا
19 جنوری 2020 (16:14) 2020-01-19

لاہور: کراچی سے خیبر تک آٹے کا بحران، ستر روپے فی کلو تک فروخت ہونے لگا، غریب کیلئے دو وقت کی روٹی کا حصول مشکل کیا ہوا عوام کے چودہ طبق روشن ہو گئے۔ آٹے بحران کے بعد نان روٹی ایسوسی ایشن نے بھی قیمتوں میں اضافے کا عندیہ دیدیا۔

تفصیلات کے مطابق ملک میں آٹے کا بحران شدت اختیار کر گیا۔ حکومتی دعوے اور اقدامات بے سود، آٹا نایاب، چکی کا دیسی آٹا بھی 70 روپے فی کلو ہو گیا۔ لاہورآٹا چکی مالکان ایسوسی ایشن قیمتوں میں اضافہ برقرار رکھنے پر بضد ہے۔ایسوسی ایشن کے صدر لیاقت علی ملک کہتے ہیں حکومت سے ایک ہی مطالبہ ہے کہ گندم سستی کر دیں تو ہم بھی آٹا سستا کر دیں گے۔ غلہ منڈیوں میں گندم کی قیمت زیادہ ہے، بجلی کے بل بھی کئی گنا بڑھ چکے ہیں۔آٹا بحران کے بعد روٹی اور نان کی قیمت بڑھانے کے لیے متحدہ نان روٹی ایسوسی ایشن بھی میدان میں ہے۔

نان روٹی ایسوسی ایشن کے صدر افتاب گل کہتے ہیں آٹا اور میدہ مہنگا ہے، مزدور کی اجرت بھی زیادہ ہے۔مہنگائی کی دوہری چکی میں پسی عوام کا کہنا ہے کہ قوت خرید مکمل ختم ہو چکی مگر بچوں کو دو وقت کی روٹی کھلانا تو مجبوری ہے، پاکستان فلور ملز ایسوسی ایشن کے مرکزی چیئرمین عاصم رضا کہتے ہیں آٹے کی قیمتوں میں اضافہ چکی مالکان کی طرف سے کیا گیا، اس کا ہم سے کوئی لینا دینا نہیں۔ 


ای پیپر