’احمد شہزاد فیورٹ پاکستانی کرکٹر، سوچا نہیں تھا کہ سرفراز احمد کی قیادت میں کھیلوں گا‘
سورس:   فوٹو: بشکریہ ٹوئٹر
19 فروری 2021 (18:33) 2021-02-19

کراچی: ویسٹ انڈیز کرکٹ ٹیم کے مایہ ناز اوپننگ بلے باز کرس گیل پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) کے چھٹے ایڈیشن میں کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی نمائندگی کریں گے اور اس مرتبہ وہ ایونٹ کے آغاز میں ہی باؤلرز کے چھکے چھڑانے کا عزم  رکھتے ہیں جن کا کہنا ہے کہ ٹورنامنٹ میں اپنی مہارت اور صلاحیت ثابت کرنے کے موقع کا بھرپور فائدہ اٹھانے کی کوشش کروں گا، احمد شہزاد میرے پسندیدہ کھلاڑیوں میں سے ایک ہیں اور سوچا نہیں تھا کہ سرفراز احمد کی قیادت میں کھیلوں گا۔ 

تفصیلات کے مطابق نجی خبر رساں ادارے سے گفتگو کرتے ہوئے کرس گیل نے کہا کہ میں 15سال بعد پاکستان واپسی پر بہت خوش ہوں،ان دنوں قرنطینہ میں ہوں لیکن اس کے باوجود جسمانی طور پر اور اس سے بھی زیادہ ذہنی طور پر خود کوکافی بہتر محسوس کررہا ہوں،  یقینی طور پر یہاں میرے پرستار موجود ہیں اور میں پی ایس ایل 6 کا شاندار آغاز کرتے ہوئے دھواں دھار اننگز سے ان کو بہترین تفریح فراہم کرتے ہوئے چہروں پر خوشیاں بکھیرنا چاہتا ہوں، میدان میں 20فیصد تماشائیوں کی آمد سے بھی حوصلہ افزائی ہونے کے ساتھ شاندار کارکردگی دکھانے کی تحریک ملے گی۔

ماضی میں پی ایس ایل میں بہتری کارکردگی نہ دکھا پانے سے متعلق سوال کے جواب میں ان کا کہنا تھا کہ اس بار پاکستانی پرستاروں کیلئے بہترین کارکردگی دکھانے کیلئے بے تاب ہوں تاکہ وہ بھی جان سکیں کہ ’’یونیورس باس‘‘ ابھی کرکٹ کی دنیا میں موجود ہے، میرے پاس اپنی مہارت اور صلاحیت ثابت کرنے کا بڑا موقع ہے جس سے بھرپور فائدہ اٹھاتے ہوئے پرستاروں اور فرنچائز کیلئے شاندار کارکردگی دکھانے کی کوشش کروں گا، اپنی مصروفیات اور وقت کا فرق ہونے کی وجہ سے کوئٹہ گلیڈی ایٹرز سمیت پی ایس ایل کے زیادہ میچز نہیں دیکھ سکا لیکن قرنطینہ میں کوچز سے بات ہوئی ہے اور کھلاڑیوں سے ملاقات کے بعد گزشتہ ایونٹ کی پرفارمنس اور آئندہ کے ٹیم پلان پر تبادلہ خیال ہوگا۔ 

کرس گیل نے کہا کہ میری کوشش ہوگی کہ اپنا کردار بخوبی ادا کرتے ہوئے ٹیم کی فتوحات میں اہم کردار ادا کروں تاہم یہ بھی حقیقت ہے کہ پی ایس ایل کے 2میچزکے بعد ویسٹ انڈیز کی جانب سے سری لنکا کیخلاف ٹی 20 سیریز میں شرکت کیلئے جانا پڑے گا اور اس کے بعد صورتحال کو دیکھتے ہوئے کوئٹہ گلیڈی ایٹرز کی دوبارہ نمائندگی کیلئے پاکستان آنے کا پلان بنایا جائے گا۔

’یونیورس باس‘ نے اس موقع پر جارحانہ کرکٹ کھیلنے کے شوقین نوجوان بلے بازوں کو مشورہ دیتے ہوئے کہا کہ اگر کسی میں چھکے لگانے کی مہارت اور صلاحیت ہے تو اس پر یقین رکھتے ہوئے سٹروکس کھیلے لیکن یاد رکھیں کہ ہر گیند پر چھکا نہیں لگایا جا سکتا،صورتحال کو دیکھ کر پلان بنائیں اور جس گیند کو پورے اعتماد سے باہر پھینک سکتے ہیں اس پر سٹروک ضرور کھیلیں لیکن شاٹ کھیلتے ہوئے پوری توجہ گیند پر مرکوز اور توازن برقرار رکھنا ضروری ہے۔

اس موقع پر انہوں نے پاکستانی اوپننگ بلے باز احمد شہزاد کی تعریف کرتے ہوئے انہیں اپنا فیورٹ پاکستانی کرکٹر قرار دیا اور کہا کہ اوپنر کے ساتھ کیریبیئن پریمیر لیگ میں کھیل چکا ہوں، وہ ہمیشہ میرے پسندیدہ کھلاڑیوں میں سے ایک ہیں،لیکن میں نے کبھی یہ نہیں سوچا تھا کہ گزشتہ کچھ عرصہ میں پاکستان کے کامیاب کپتان سرفراز احمد کی قیادت میں کھیلنے کا موقع ملے گا، ماضی میں معین خان کیخلاف کھیل چکا لیکن اب وہ کوچ ہیں اور امید ہے کہ ان کے تجربے سے کافی کچھ سیکھنے کو ملے گا۔ ان کا مزید کہنا تھا بلے باز ہوں یا باؤلرز، پاکستان میں باصلاحیت کرکٹرز کی کبھی کمی نہیں رہی،خاص طور پر کسی بھی طرح کی کنڈیشنز میں پاکستانی باؤلرز کا سامنا بلے بازوں کیلئے آسان نہیں ہوتا۔


ای پیپر