NASA,crossed,milestone,Perseverance,finally,landed,Mars
19 فروری 2021 (10:58) 2021-02-19

واشنگٹن : ناسا نے انسانی تاریخ  کا ایک اور اہم سنگ میل عبور کر لیا ٗ ’’پرسیورنس‘‘ بالآخر مریخ پر لینڈ کر گیا جہاں سے مریخ کے بارے میں مزید نئے انکشافات کی توقع ہے۔

تفصیلات کے مطابق امریکہ کے خلائی ادارے ناسا کا ’’پرسیورنس‘‘ مریخ کی زمین پر لینڈ کر گیا ہے ۔ناسا کا مشن 239 ملین میل کا فاصلہ طے کر کے اپنی منزل پر پہنچا جہاں پر ابتدائی طور پر 820 فٹ گہرے مکعب جزیروں میں زندگی کے آثار تلاش  کئے گئے جہاں پر ناسا کی ابتدائی تحقیق میں معلوم ہوا کہ مریخ کے  جزیروں پر ساڑھے تین ارب سال پہلے اسی مقام پر جھیل تھی۔

ناسا کے مریخ مشن پر دو ارب بیس کروڑ ڈالر لاگت آئی ہے۔ ناسا کے ہیڈ آفس میں اس وقت سراسیمگی کی کیفیت پیدا ہو گئی جب ’’پرسیورنس‘‘ کے لینڈنگ کی رپورٹ نہیں مل رہی تھی لیکن ہال میں اس وقت خوشی کے نعرے بلند ہوگئے جب گیارہ منٹ بعد ناسا کو لینڈنگ کا سگنل موصول ہوا۔

یاد رہے کہ چند ہی قبل ہی یو ای اے کا ایک خلائی مشن بھی مریخ کے مدار میں شامل ہو گیا تھا جس کے بعد یو اے ای ان پانچ ممالک میں شامل ہو گیا تھا جو مریخ تک پہنچے ہیں۔ سائنسی ماہرین کا ماننا ہے کہ ناسا کی طرف سے یہ ایک بہت بڑی کامیابی ہے جس کے بعد یہ معلوم ہو سکے گا کہ مریخ پر زندگی موجود ہے یا نہیں اور اگر وہاں پر زندگی ہے تو اس کی نوعیت کیا ہو سکتی ہے ؟ 


ای پیپر