PDM, sit-in, week, Islamabad, resignation, Imran Khan
19 دسمبر 2020 (09:23) 2020-12-19

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان نے پی ڈی ایم کو بیک وقت ایک آفر اور ایک چیلنج دیدیا کہا، اپوزیشن لانگ مارچ کا شوق پورا کرلے پتہ چل جائے گا کہ استعفیٰ حزب اختلاف کو دنیا ہے یا انہیں۔

تفصیلات کے مطابق عمران خان نے اپوزیشن رہنماوں کو چیلنج کرتے ہوئے کہا کہ پی ڈی ایم ایک ہفتہ اسلام آباد میں گزارے تو پھر وہ استعفے کا سوچیں گے۔

انہوں نے مزید کہا کہ فوج حکومت کا ادارہ ہے، آرمی وزیراعظم سے بالا نہیں بلکہ ماتحت ہے۔

عمران خان نے کہا کہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی تعریف کرتا ہوں کہ وہ تنقید برداشت کر رہے ہیں ، کوئی ہوتا تو ری ایکشن آتا۔

اپنے بیان میں وزیراعظم نے کہا کہ یہ بالکل غلط خبر ہے کہ کوئی حکومتی وزیر اسرائیل گیا تھا۔ اسرائیل کو تسلیم ہی نہیں کر سکتے تو وہاں کوئی کیوں جائے گا؟

وزیراعظم نے فلسطینیوں کے ساتھ یکجہتی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ پاکستانی قوم فلسطینیوں کے ساتھ کھڑی ہے۔ فلسطینیوں کو ان کے حقوق ملنے تک اسرائیل کو تسلیم نہیں کر سکتے۔

خیال رہے کہ اپنے ایک انٹرویو میں عمران خان نے اعتراف کیا تھا کہ پاکستان پر شدید وبا ہے کہ وہ اسرائیل کو تسلیم کرے اور اُس کے ساتھ سفارتی اور تجارتی تعلقات قائم کرے۔ انہوں نے یہ بھی انکشاف کیا تھا کہ کچھ دوست ممالک کی جانب سے بھی پاکستان کو مجبور کیا جا رہا ہے کہ وہ اسرائیل کے ساتھ تعلقات استوار کرے۔

واضح رہے کہ عمران خان نے دوست ممالک کا نام نہیں لیا تھا لیکن انٹرنیشنل میڈیا کے مطابق یہ ممالک سعودی عرب اور یو اے ای ہو سکتے ہیں۔ کیونکہ ان دونوں ملکوں کے کچھ مہینوں سے پاکستان کے ساتھ تعلقات اچھے نہیں ہیں۔ اور سعودی عرب اور یو اے ای نے کشمیر کے معاملے میں پاکستان کی حمایت بھی نہیں کی۔


ای پیپر