TLP,Khadam Rizvi,Saad Rizvi,TLP Ban in Pakistan
19 اپریل 2021 (15:54) 2021-04-19

لاہور:کالعدم تحریک لبیک پاکستان کے ساتھ مذاکرات کیلئے حکومتی مشینری حرکت میں آگئی ،گورنر پنجاب چوہدری محمد سرور کی سربراہی میں راجہ بشارت نے ٹی ایل پی کی مرکزی قیادت کے سینئر رہنمائوں سے مذاکرات شروع کر دئیے ہیں ۔

تفصیلات کے مطابق کالعدم تحریک لبیک پاکستان سے حکومت نے بیک ڈور رابطے شروع کر دئیے ہیں جس میں گورنر پنجاب چوہدری سرور کی سربراہی میں وزیر قانون راجہ بشارت نے ٹی ایل پی کی مرکزی قیادت سے ایک نیوٹر ل مقام پر ملاقات کی ہے ،جس میں موجو د صورتحال پر قابوپانے کیلئے اہم پیش رفت سامنے آنے کی توقع ظاہر کی جا رہی ہے ۔

مذاکرات کی اندرونی خبر کے مطابق پہلے دور میں حکومت اور ٹی ایل پی کے درمیان سیز فائر پر معاہد ہ ہونے کا امکان ہے ،جس کے بعد لانگ مارچ اور کارکنوں کی رہائی پر بات چیت ہو گی ، ذرائع نے بتایا کہ مذاکرات کے دوسرے دور میں دہشت گردی کے مقدمات والوں پر نہیں صرف ایم پی او کے تحت حراست میں لیے کارکنوں پرمذاکرات ہوں گے جبکہ حکومتی کمیٹی لانگ مارچ کی منسوخی پر زور دے رہی ہے۔ 

ذرائع نے بتایا  مذاکرات کو دوسرا دور شام کو ہو گا، دونوں حکومتی نمائندے مذاکرات کی کامیابی کے لیے کافی پُر اُمید ہیں کیونکہ مذاکرات کا پہلا دور بھی تین سے چار گھنٹے کا ہوا تھا جس میں کافی چیزیں طے کر لی گئی تھیں۔ پہلے دور میں سیز فائر کے تحت دونوں طرف سے سیز فائز پر عمل کیا گیا۔

واضح رہے دوسری طرف وزیر اعظم عمران خان ممکنہ طور پر آج قوم سے خطاب کرینگے ،اپنے خطاب میں وزیر اعظم ناموس رسالت ﷺ    کے تحفظ اور گستاخانہ خاکوں کیخلاف حکومتی اقدامات کے حوالے سے قوم کو آگاہ کرینگے ۔

 وزیر اعظم آج کسی بھی وقت قوم سے خطاب کرسکتے ہیں ،ذرائع کے مطابق ابھی وقت کا تعین نہیں کیا گیا ،مرکزی قیادت سے مشاورت کے بعد ہی اس بات کا امکان ظاہر کیا جا رہا ہے کہ عمران خان گستاخانہ خاکوں کے بعد پاکستانی قوم کو اعتماد میں لینگے ،اپنے خطاب میں عمران خان عوام کے سامنے تمام حقائق رکھیں گے ۔


ای پیپر