صاف پانی فراہمی کیس میں پرویز خٹک کی طلبی

19 اپریل 2018 (14:00)

پشاور: چیف جسٹس پاکستان جسٹس ثاقب نثار نے صاف پانی فراہمی کیس میں وزیراعلی خیبر پختون خوا پرویز خٹک کو عدالت میں طلب کرلیا۔


چیف جسٹس ثاقب نثار کی سربراہی میں سپریم کورٹ پشاور رجسٹری میں صاف پانی کی فراہمی اور اسپتالوں میں فضلہ تلف کرنے کے حوالے سے متعلق ازخود نوٹس کیسز کی سماعت ہوئی جس دوران چیف جسٹس ثاقب نثار نے استفسار کیا کہ ہسپتالوں سے کتنا فضلہ نکلتا ہے، ہم نے بہتری کے لیے کچھ کرنا ہے۔چیف جسٹس نے ہسپتالوں میں فضلہ تلف کرنے کے حوالے سے متعلق کیس میں چیف سیکرٹری اور سیکرٹری ہیلتھ جب کہ صاف پانی کی فراہمی کیس میں وزیر اعلی پرویز خٹک کو طلب کر لیا۔ چیف جسٹس نے ریمارکس میں کہا کہ وزیراعلی جب چاہیں عدالت آ جائیں۔


مزید برآںچیف جسٹس آف پاکستان ثاقب نثار نے الرازی میڈیکل کالج کا دورہ کیا۔ چیف جسٹس نے طلباء کو سہولتیں نہ دینے پر اظہار برہمی کرتے ہوئے کالج کے پرنسپل کے دیگر عملے سے تعلیمی اسناد طلب کرلیں۔ چیف جسٹس نے استفسار کیا کہ طلباء سے لاکھوں روپے لے رہے ہیں سہولت کیا دے رہے ہیں؟ طلباء کو چھوٹی سی کلاس میں بٹھایا ہوا ہے۔ چیف جسٹس نے کالج انتظامیہ کو طلباء کی فیس واپس کرنے کا حکم دیتے ہوئے کہا کہ آپ کا پی ایم ڈی سی سے آڈٹ کرائیں گے۔ چیف جسٹس نے ایف آئی اے کو کالج کا ریکارڈ قبضے میں کرنے کا حکم دیدیا۔

مزیدخبریں