وزیر اعظم عمران خان اور آرمی چیف ایک پیج پر ہیں:ڈی جی آئی ایس پی آر
18 نومبر 2019 (23:59) 2019-11-18

راولپنڈی: پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر ) کے ڈائریکٹر جنرل میجر جنرل آصف غفور نے آرمی چیف اور وزیراعظم کے درمیان فاصلے یا انڈرسٹینڈنگ کے فقدا ن کی قیا س آرائیوں کوبے بنیاد قرار دیتے ہوئے مسترد کرتے ہوئے کہاکہ وزیراعظم اور آرمی چیف دونوں مسلسل رابطے میں ہیں، جب بھی ضرورت پیش آتی تو ملاقاتیں ہوجاتی ہیں، حکومت اور فوج ایک پیج پرہے۔

حکومت سے ریاستی امور پر کوئی دو رائے نہیں، آئینی ذمہ داری کے مطابق جمہوری حکومت کی حمایت کررہے ہیں،پاکستان کی ترقی کیلئے ضروری ہے کہ وزیراعظم اورآرمی چیف دونوںرابطے میں رہیں۔

ڈی جی آئی ایس پی آر سے سوال کیا گیا کہ سوشل میڈیا پر قیا س آرائیاں ہیں کہ وزیراعظم اور آرمی چیف کے درمیان انڈرسٹینڈنگ کی کمی ہے جبکہ ان کی گزشتہ دو ملاقاتوں کے درمیان بھی لمبا خلا تھا تو اس کے جواب میں ڈی جی آئی ایس پی آر نے ایسی تمام قیاس آرائیوں کو مسترد کرتے ہوئے انہیں بے بنیاد قراردے دیا اور کہا کہ ان دونوں کے درمیان اس طرح کوئی فاصلہ نہیں ہے ۔

انہوں نے کہا کہ فوج آئین کے تحت جمہوری طور پر منتخب حکومت کی حمایت کر رہی ہے اور اس میں کوئی کسر نہیں چھوڑی جائیگی کیونکہ یہ پاکستان کی ترقی وخوشحالی کےلئے ضروری ہے ۔انہوں نے کہا کہ میڈیا میں کور کی گئی دو ملاقاتوں کی مدت کے درمیان آرمی چیف اور وزیراعظم کے درمیان ملاقاتیں اور ٹیلیفون کالیں ہوتی رہیں اور مسلسل رابطہ رہا۔

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر)کے میجر جنرل آصف غفور کا کہنا تھا کہ حکومت سے ریاستی امور پر کوئی دو رائے نہیں ہے۔ان کا کہنا تھا کہ پاکستان کی ترقی کیلئے ضروری ہے کہ دونوں (وزیراعظم، آرمی چیف ) رابطے میں رہیں، ملاقاتیں معمول کا حصہ ہیں مگر یہ علیحدہ بات ہے کہ ہر ملاقات رپورٹ نہیں ہوگی۔

وزیراعظم اور آرمی چیف دونوں رابطے میں ہیں، جب بھی ضرورت پیش آتی تو ملاقاتیں ہوجاتی ہیں۔ پاک فوج کے ترجمان کا کہنا تھا کہ حکومت اور فوج ایک پیج پرہے۔

یاد رہے کہ گزشتہ دنوں وزیراعظم عمران خان اور چیف آف آرمی اسٹاف کی اہم ملاقات ہوئی تھی جس میں مختلف امور پر تبادلہ خیال کیا گیا تھا۔ یاد رہے کہ یکم نومبر کو ایک ٹی وی انٹرویو میں ڈی جی آئی ایس پی آر میجر جنرل آصف غفور نے کہا تھا کہ پاک فوج ایک غیرجانبدارادارہ ہے، الیکشن میں ڈیوٹی کر کے آئینی ذمہ داری پوری کی، ہماری سپورٹ جمہوری اور منتخب حکومت کے ساتھ رہتی ہے۔


ای پیپر