عوام معاشی قاتلوں کے رحم و کرم پر ہے: خرم دستگیر
18 جون 2020 (17:45) 2020-06-18

مسلم لیگ(ن)کے انجینئر خرم دستگیر خان نے کہا کہ کرونا وائرس میں خدمات سر انجام دینے والوں کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں جو ہماری حفاظت کر رہے ہیں، کرونا کے بیماروں کو صحت کی دعا کرتا ہوں، حکومت نے بجٹ پیش کیا ہے، اس کا خلاصہ ہے کہ جھوٹ پھیلائو، غریب مکائو، آئی ایم ایف بلائو، مافیا بڑھائو اور ڈنگ ٹپائو پالیسی پر گامزن ہے۔

قومی اسمبلی میں خطاب کرتے ہوئے خرم دستگیر خان نے کہا کہ بجٹ مڈل کلاس کسانوں اور صحت کاروں اور عوام کے معاشی قتل عام کی ایف آئی آر ہے، عوام کو معاشی قاتلوں کے رحم و کرم پر چھوڑ دیا ہے، لاک ڈائون نہ کرنے سے اموات بڑھ رہی ہیں، وزیراعظم سے پوچھتا ہوں کہ تم کوکتنوں کا خون چاہیے،500ڈاکٹر اور سٹاف متاثر ہو چکے ہیں،38ڈاکٹر وفات پا گئے ہیں، حکومت کی بے تدبیری نے سب ناکام کر دیا ہے،بیماری بے قابو ہو رہی ہے، جس دن لاک ڈائون کھولا، 600اموات ہوئی تھی، حکومت بضد ہے کہ ابھی بھی اموات کا جو تخمینہ تھا پورا نہیں ہوا، حکومت کی پالیسی ناکام ہو گئی تو عوام کو ٹی وی پر جاہل کہا جا رہا ہے۔

خرم دستگیر نے کہا کہ وائرس کو عام فلو مشیر صحت نے کہا تھا، حکومت اپنی انا کی پرستش کر رہی ہے، حکومت عوام کے جانوں تحفظ میں ناکام ہے، معیشت کرونا سے پہلے ناکام ہو گئی تھی، معیشت کی تباہی جھوٹ سے شروع ہوئی، 1.9کی جی ڈی پی گروتھ3.2فیصد پہلے سال بتائی، گندم وافر ہے تو آٹا کیوں مہنگا ہو رہا ہے، مہنگائی 14.20فیصد تک پہنچی، دیہاتی علاقوں میں اشیاء خوردونوش کی مہنگائی 24فیصد ہو گی، حکومت کے جھوٹ ختم نہیں ہو رہے، ہم نے ایف بی آر کے محصولات کو دو گنا کیا، تاریخ میں پہلی دفعہ کی حکومت نے گزشتہ سال سے کم ریونیو اکٹھا کیا آٹا اور چینی ، گندم کا بحران کرونا سے پہلے آیا،30ہزار ارب کے قرضہ کی گردان عمران خان کرتے تھے ۔


ای پیپر