The Prime Minister will leave the government but will not give NRO, Sheikh Rashid
18 دسمبر 2020 (07:29) 2020-12-18

اسلام آباد:وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید احمد نے کہا ہے کہ وزیراعظم عمران خان حکومت چھوڑ دیں گے لیکن این آر او نہیں دیں گے، موجودہ حالات میں سینٹ الیکشن بہت اہم ہیں، شو آف ہینڈز وزیراعظم کا بہترین فیصلہ ہے، وزیراعظم عمران خان سینٹ الیکشن میں کامیاب ہوں گے، وزیراعظم عمران خان کی ہر صورت میں مخالفت کرنا اپوزیشن کا وطیرہ بن چکا، اپوزیشن بند گلی میں جا چکی ہے.

ان کے پاس کوئی راستہ نہیں، استعفوں کے معاملے پر پی ڈی ایم میں شامل جماعتیں تقسیم کا شکار ہیں،(ن)لیگ کے بہت سے ایم این ایز استعفے نہیں دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن والے لوگوں کو غلط تاریخیں دے رہے ہیں، چیئرمین سینٹ کے خلاف تحریک میں سب کو پتہ ہے کہ کس نے ووٹ نہیں دیا، ایسے بھی لوگ تھے جو ہوٹل میں تھے، ووٹ ڈالنے نہیں آئے.

اپوزیشن  کے 16 ووٹ کم ہوئے، اپوزیشن کو ان لوگوں کو نکالنا چاہیے تھا۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن کا وطیرہ ہے کہ وزیراعظم عمران خان کی ہر صورت میں مخالفت کرنی ہے، ووٹ بیچنے پر عمران خان نے اپنے 20 لوگ نکالے تھے۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان کہہ رہے ہیں شو آف ہینڈ کے ذریعے الیکشن ہو، اپوزیشن اس سے انکاری ہے، اپوزیشن سمجھتی ہے خفیہ بیلٹ سے ان کو ووٹ مل سکتے ہیں، وزیراعظم عمران خان کہتے ہیں کہ ہارس ٹریڈنگ نہ ہو اور شو آف ہینڈ کے ذریعے سینٹ الیکشن ہو۔

انہوں نے کہا کہ شو آف ہینڈز عمران خان کا سمارٹ موو ہے، بہترین فیصلہ ہے، وزیراعظم عمران خان سینٹ میں بھی اکثریت مل گئی تو وہ بہت سے اہم فیصلے کر جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن بند گلی میں جا چکی ہے، ان کے پاس کوئی راستہ نہیں، اپوزیشن نے استعفے دے دیئے تو یہ خود ہی پھنس جائیں گے، وزیراعظم کہتے ہیں اپوزیشن استعفے دے تو خالی نشستوں پر نئے الیکشن کرا دیں گے۔ شیخ رشید احمد نے کہا کہ ن لیگ کے استعفے ابھی شہباز شریف کے پاس جائیں گے کیونکہ وہ پارٹی صدر ہیں، استعفوں کے معاملے پر مسلم لیگ (ن)تقسیم کا شکار ہے، ن لیگ کے بہت سے ایم این ایز استعفے نہیں دیں گے۔

انہوں نے کہا کہ بلاول بھٹو کو مسلم لیگ ن خود پنجاب میں متعارف کروا رہی ہے، یہ لوگ خود نئے لوگوں کو موقع دے رہے ہیں، اپوزیشن استعفوں سے متعلق بہت بڑا رسک لے رہی ہے، سب نے استعفے دیئے تو ضرور  مشکل پیدا ہوگی، پیپلز پارٹی سندھ حکومت نہیں چھوڑے گی، امید ہے ایک دو ماہ میں کوئی درمیان کا راستہ نکل آئے گا۔ انہوں نے کہا کہ لندن جا کر بیٹھ جانا نواز شریف کی زندگی کا بڑا سیاسی بلنڈر ہے، حکومت کی پوری کوشش ہے نواز شریف کو واپس لایا جائے، برطانیہ کے ساتھ دوطرفہ قیدیوں کے تبادلے کا ابھی کوئی معاہدہ نہیں ہے۔

ایک سوال کے جواب میں وفاقی وزیر داخلہ نے کہا کہ اپوزیشن جماعتوں نے وزیراعظم عمران خان سے بات نہیں کرنی تو بتائیں کس سے کرنی ہے، وزیراعظم عمران خان حکومت چھوڑ دیں گے لیکن این آر او نہیں دیں گے اور وزیراعظم عمران خان اپنی پانچ سالہ آئینی مدت پوری کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ندیم بابر نے پٹرولیم مصنوعات پر جو وضاحت دی اس پر مطمئن ہوں، ندیم بابر کی وضاحت پر کابینہ میں بہت سے لوگ مطمئن نہیں، ندیم بابر والے معاملے میں کافی وزرا نے سخت باتیں کی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اس وقت 28 سیاستدانوں کی جان کو خطرہ ہے، اسلام آباد میں 2 سے 3 اہم عمارتوں کو بھی دہشتگردی کا خطرہ ہے، آج بھی دہشتگردوں کا بڑا گروپ پکڑا گیا ہے، اس حوالے سے مزید تفصیل نہیں بتا سکتا، پکڑے جانے والے دہشتگردوں کے گروپ سے تفتیش جاری ہے۔ ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ اگر کوئی حادثہ نہ ہو تو وزارت ریلوے بہت آسان ہے، وزارت اطلاعات ماضی کے مقابلے میں کافی مشکل ہو گئی ہے، آج کے دور کے حساب سے میں خود کو وزارت اطلاعات کے قابل نہیں سمجھتا۔


ای پیپر