Foreign Office, reports, pressure, Pakistan, Israel
کیپشن:   فائل فوٹو
17 نومبر 2020 (16:02) 2020-11-17

اسلام آباد: دفتر خارجہ کی اسرائیل کو تسلیم کرنے سے متعلق پاکستان پر دباؤ کی خبروں کی تردید۔ انہوں نے وزیراعظم عمران خان پر اسرائیل کو تسلیم کرنے کے لئے امریکی دباؤ سے متعلق خبروں کو جعلی قرار دیدیا۔

ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان نے فلسطین سے متعلق پاکستان کے مؤقف پر واضح الفاظ میں بات کی تھی، جب تک فلسطینی عوام کے لئے مسئلہ کا قابل اطمینان حل نہیں نکلتا پاکستان اسرائیل کو تسلیم نہیں کرسکتا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان اقوام متحدہ اور او آئی سی کی قراردادوں کے مطابق دو ریاستی حل کی حمایت کرتا رہے گا۔

ترجمان دفتر خارجہ کے مطابق فلسطین کے معاملے پر پاکستان کی پالیسی قائداعظم کے وژن سے جڑی ہوئی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان ایک منصفانہ ، جامع اور پائیدار امن کے لیے 1967 سے پہلے کی سرحدوں اور القدس الشریف کو دارالحکومت کے طور پر دیکھنا چاہتا ہے۔

واضح رہے کہ عرب ممالک کے اسرائیل کے ساتھ امن معاہدے پر تبصرہ کرتے ہوئے عمران خان نے کہا تھا کہ پاکستان فلسطین کی اُس وقت تک حمایت کرتا رہے گا جب تک مظلوم عوام کو اُن کا حق نہیں مل جاتا۔

خیال رہے کہ پاکستان کی طرح ترکی اور ایران نے بھی عرب ممالک کی اسرائیل کے ساتھ امن معاہدے کی بھر پور مخالفت کی تھی۔

دونوں ملکوں کے نزدیک متحدہ عرب امارات اور بحرین نے اسرائیل کے ساتھ ہاتھ ملا کر فلسطینی عوام کے ساتھ غداری کی ہے۔

یاد رہے کہ امریکی صدر اور اسرائیل نے دعوی کیا تھا کہ یو اے ای، بحرین اور سوڈان کے علاوہ اور بھی کئی عرب ممالک ہیں جو اسرائیل کے ساتھ امن معاہدہ کرنے کے خواہاں ہیں۔ ٹرمپ نے سعودی عرب سے متعلق دعوی کیا تھا کہ محمد بن سلمان جلد ہی اسرائیل کے ساتھ امن معاہدہ کر لیں گے۔


ای پیپر