ناراض لیگی ارکان نے بغاوت کیوں کی ،رانا ثنا اللہ کا اہم انکشاف
17 جولائی 2020 (19:05) 2020-07-17

لاہور : ناراض ن لیگی ارکان سے متعلق رانا ثنا اللہ ن اہم انکشاف کرتے ہوئے کہا کہ ن لیگی ارکان اسمبلی کو دھمکیاں دی جا رہی ہیں کہ یا تو وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار سے ملاقات کیلئے راضی ہو جائو یا پھر جیل جانے کیلئے تیار ہو جائو ۔

مسلم لیگ ن پنجاب کے صدر رانا ثناء اللہ خان نے کہا ہے کہ ناراض لیگی ارکان 40 ہیں توصرف 6 کیوں دکھائے گئے؟ ارکان اسمبلی سے کہا جا رہا ہے، جیل جاؤ یا وزیراعلیٰ پنجاب سے ملاقات کرو، پی آئی اے کو نقصان پہنچانے پر وزیراعظم اور وزیرہوابازی مستعفی ہوجائیں، اے پی سی کیلئے بلاول بھٹو اور شہباز شریف کے درمیان دو مرتبہ بات ہو چکی ہے۔

انہوں نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ ارکان اسمبلی سے کہا جا رہا ہے، جیل جاؤ یا وزیراعلیٰ پنجاب سے ملاقات کرو۔ ناراض لیگی ارکان کی تعداد 35 سے 40 ہے توصرف 5 سے 6 کیوں دکھائے گئے؟ ان سے کوئی پوچھے کہ کیا اسمبلی میں کوئی تحریک عدم اعتماد آرہی ہے جو نمبر گیم کر رہے ہیں۔ اے پی سی کے معاملے پر بلاول بھٹو اور شہباز شریف کے درمیان دو مرتبہ بات ہو چکی ہے۔

ہمارا مطالبہ ہےکہ ملک میں صاف وشفاف الیکشن کروائے جائیں۔ الیکشن کمیشن انتخابات میں امپائر کا کردار ادا کرے۔ انہوں نے کہا کہ نیب کو گھٹیا طریقے سے استعمال کیا جارہا ہے۔ بجٹ سے پہلے اپوزیشن لیڈر کو گرفتار کرنے کی کوشش کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ حکومتی مافیاز کو اپوزیشن کو گالیاں دینے کے سوا کوئی کام نہیں۔

آٹے کا 20 کلو کا تھیلا 860 کے بجائے 1170 روپے کا مل رہا ہے،چینی کی قیمت53 روپے سے بڑھ کر90 روپے تک آگئی ہے۔ مافیا کو کوئی روکنے والا نہیں ہے۔ آٹے کا بحران سر پر منڈلا رہا ہے، مافیا سرگرم ہے، چینی بحران کا ذمہ دار مافیا حکومت کے ساتھ بیٹھا ہے۔ ایک مافیا کو باہر بھیج دیا گیا۔ حکومت میں بیٹھے مافیا نے300ارب روپے تک کا ڈاکہ ڈالا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت پائلٹس کے لائسنس کا ملبہ ن لیگ اور پیپلز پارٹی پر ڈالنا چاہتی ہے۔


ای پیپر