Source : Yahoo

ملک گالی گلوچ اور نفرت آمیز سیاست کا متحمل نہیں ہوسکتا،بلاول بھٹو
17 جولائی 2018 (18:40) 2018-07-17

اسلام آباد: پاکستان پیپلز پارٹی (پی پی پی )کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ موجودہ اقتصادی اور معاشی صورتحال کے تناظر میں ملک گالی گلوچ اور نفرت آمیز سیاست کا متحمل نہیں ہو سکتا،شہید بینظیر بھٹو کی تربیت میرے ساتھ ہے،پیپلز پارٹی کے وزیراعظم کا فیصلہ قیادت کرے گی تاہم آصف علی زرداری کے نظریہ مخلوط حکومت سے مثبت نتائج سامنے آ سکیں گے۔

منگل کو وفاقی دارالحکومت اسلام آباد میں میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے چیئرمین پاکستان پیپلز پارٹی بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ تجربہ کار سیاستدان اپنی تقاریر کے ذریعے عوام کو مسائل کے بارے آگاہی دینے کے بجائے سیاسی مخالفین پر جسمانی تشدد کے حوالے سے اکسانے رہے ہیں جس سے صرف ملکی ترقی میں خلل پیدا ہوگا۔ان کا کہنا تھا کہ شہید بینظیر بھٹو کی تربیت میرے ساتھ ہے، اپنے مثبت کردار اور نظریات کی مدد سے نوجوانوں کو متاثر کرنا چاہتا ہوں، یقینا اسی کی بنیاد پر نوجوان طبقہ سیاست، معیشت اور اقتصادیات وغیرہ میں اپنا کردار ادا کرے گا۔

بلاول بھٹو نے واضح کیا کہ فاشٹ ذہنیت کے حامل سیاستدانوں کی تعلیمات سے ملک کا ٹیلنٹ ضائع ہو جائے گا۔انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی کے وزیراعظم کا فیصلہ قیادت کرے گی تاہم آصف علی زرداری کے نظریہ مخلوط حکومت سے مثبت نتائج سامنے آ سکیں گے۔ان کا کہنا تھا کہ پیپلز پارٹی نے ہر دور میں سیاست، ریاست اور اداروں کو استحکام بخشا اور اس وقت ہر شعبے میں ملک کو شدید بحران کا سامنا ہے جسے صرف پیپلز پارٹی ہی نکال سکتی ہے۔

انہوں نے کہا کہ سندھ کے عوام جانتے ہیں کہ پیپلز پارٹی نے کٹھ پتلی سیاسی اتحادیوں کا سامنا کیا ہے، سیاسی اتحادیوں کے پاس بات کرنے کے لیے کچھ نہیں ہے اور مختلف ناموں کے ساتھ سامنے آئیں ہیں لیکن گزشتہ ادوار کی طرح اس مرتبہ بھی شکست دیں گے۔بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ میری توجہ پارٹی منشور اور عوامی مسائل پر ہے، خود بھی پارلیمنٹ میں ہوں گا اور پیپلز پارٹی کے نمائندے بھی ہوں گے۔پارٹی کے چیئرمین کا کہنا تھا کہ عوام نے پیپلز پارٹی کے نظریئے کو قبول کیا تاہم دہشت گردی کی وجہ سے بعض جلسے منسوخ کیے۔


ای پیپر