Source : Yahoo

نواز شریف کا ائیر پورٹ پر استقبال نہ کرنے پر پارٹی میں اختلافات
17 جولائی 2018 (15:11) 2018-07-17

اسلام آباد:مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف نے 12جولائی سے دو روز پہلے مسلم لیگ ن کے قائد نواز شریف کا ریلی کے ذریعے ائیر پورٹ پر استقبال نہ کرنے کا فیصلہ کرلیا تھا ۔

تفصیلات کے مطابق شہباز شریف نے نواز شریف کے استقبال کیلئے جانے والی 12جولائی کو ائیر پورٹ جانے والی ریلی کا پروگرام 2روز قبل منسوخ کردیا تھا اور 12جولائی کو مسلم لیگ ن کے سینئر رہنمائوں خواجہ آصف،پرویز رشید ،خواجہ سعد رفیق ،مشاہد حسین سیداور مشاہد اللہ خان کو بھی فیصلے سے مشاروت آگاہ کردیا تھا جس پر خواجہ آصف ،پرویز رشید اور مشاہد حسین نے فیصلہ ماننے سے انکار کردیا تھا لیکن پارٹی قائد کے اٹل فیصلے کے بعد انہیں مجبوراً سرخم ہونا پڑا ۔

لیکن مشاہد اللہ خان نے شہباز شریف کے فیصلے کو تسلیم نہیں کیا اور اپنے چند کارکنوں کے ساتھ قائد کے استقبال کیلئے ائیر پورٹ پہنچے اور شہباز شریف متعدد رہنمائوں کے ہمراہ ائیر پورٹ سے 5کلو میٹر دور جوڑے پل پر ہزاروں کارکنوں کے ساتھ کھڑے رہے اس کے علاوہ انہیں آئی جی پنجاب کلیم امام نے بھی شہباز شریف کو ائیر پورٹ پہنچنے کی صورت میں سنگین خطرات سے آگاہ کردیا تھا اور ریلی کے دوران شہباز شریف اور آئی پنجاب کا ٹیلی فونک رابطہ بھی مسلسل برقرا رہا ۔

واضح رہے کہ شہباز شریف کی جانب سے جب پارٹی سینئر رہنمائوں کو نواز شریف کا استقبال نہ کرنے کی نوید سنائی گئی تو خواجہ سعد رفیق نے قطر میں بھی رابطہ کیا کے پارٹی کی جانب سے ایسا پروگرام بنایا جارہا ہے کہ جس پر شہباز شریف کافی ناراض ہوئے اور سعد رفیق سے کہا کہ پارٹی قائد ہونے کے باوجود قطر سے کیوں رابطے کیے گئے۔


ای پیپر