Federal government, Sindh, private companies, pandemic vaccines, Asad Umar
17 جنوری 2021 (17:00) 2021-01-17

اسلام آباد: وفاقی وزیر برائے منصوبہ بندی اور سربراہ نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر (این سی او سی) اسد عمر نے کہا ہے کہ سندھ حکومت مکمل طور پر آزاد ہے اگر وہ عالمی وبا کی ویکسین خریدنا چاہے ، انہوں نے کہا کہ ملک میں پرائیوٹ ادارے بھی ویکسین منگوا سکتے ہیں۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے اسد عمر نے کہا کہ سندھ حکومت اگر خود عالمی وبا کی ویکسین خریدنا چاہتی ہے تو ضرور خریدے وفاقی حکومت اس معاملے میں اُن کی حوصلہ افزائی کرے گی۔

خیال رہے کہ گزشتہ روز صوبائی وزیر سندھ نے پریس کانفرنس کے دوران وفاقی حکومت سے مطالبہ کیا تھا کہ وہ انہیں خود ہی ویکسین خریدنے کی اجازت دے۔

وفاقی وزیر نے مزید بتایا کہ عالمی وبا کے خاتمے کے لیے جلد ہی پاکستان میں 3 ویکسین دستیاب ہوں گی۔ انہوں نے دعویٰ کیا کہ فروری اور مارچ 2021 میں تینوں ویکسین پاکستان میں موجود ہوں گی۔

اسد عمر نے بتایا کہ حکومت پاکستان نے برطانیہ کی آکسفورڈ یونیورسٹی کی دوا کی بھی منظوری دیدی ہے۔ اس سمیت دیگر دو ادویات جلد ملک میں پہنچ جائیں گی اور لوگوں کو وبائی مرض سے بچانے کے لیے حفاظتی ٹیکوں کا عمل شروع کر دیا جائے گا۔

انہوں نے واضح کیا کہ یہ ویکسین سب سے پہلے پاکستان میں موجود طبی عملے کو لگائی جائے گی ، اس کے لیے تقریبا تین لاکھ طبی عملے کو رجسٹرڈ کر لیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ معمر افراد کو بھی عالمی وبا سے بچاؤ کیلئے ویکسین لگائی جائے گی۔

واضح رہے کہ وبا کے پاکستان میں حملے جاری ہیں ، چوبیس گھنٹے میں وبا سے 43 مریض موت کے منہ میں چلے گئے ہیں، جس کے بعد اموات کی مجموعی تعداد بڑھ کر 10 ہزار 951 تک پہنچ گئی ، دو ہزار 521 نئے کیسز رپورٹ ہوئے جبکہ تصدیق شدہ متاثرہ کیسز کی تعداد پانچ لاکھ انیس ہزار 291 ہوگئی، چار لاکھ 73 ہزار 639 لوگ اب تک صحتیاب ہوچکے ہیں۔


ای پیپر