شہباز شریف کی وطن واپسی ، خفیہ منصوبہ سامنے آگیا
17 فروری 2020 (23:15) 2020-02-17

اسلام آباد: مسلم لیگ ن کے رہنماءاوررکن قومی اسمبلی رانا ثناءاللہ کہا کہ شہباز شریف کا طریقہ کار وہی ہو گا جس پر تمام تینوں جماعتوں کا اتفاق ہوگا ، شہباز شریف واپس آئینگے تو پہلا کام اپوزیشن جماعتوں کے ساتھ بیٹھک کا ہوگا ، شیخ رشید بتائیں نواز شریف کے خلاف کارروائی کس نے شروع کی ، مولانا فضل الرحمان نے موقف اختیار کیا تھا کہ پارلیمنٹ کا حصہ نہیں بننا چاہیے۔

پیر کو نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے مسلم لیگ ن کے رہنماءرانا ثناءاللہ کہا کہ شہباز شریف کا طریقہ کار وہی ہو گا جس پر تمام تینوں جماعتوں کا اتفاق ہوگا ۔ شہباز شریف واپس آئینگے تو پہلا کام اپوزیشن جماعتوں کے ساتھ بیٹھک کا ہوگا ۔ انہوں نے کہا کہ شیخ رشید بتائیں نواز شریف کے خلاف کارروائی کس نے شروع کی ۔ مولانا فضل الرحمان نے موقف اختیار کیا تھا کہ پارلیمنٹ کا حصہ نہیں بننا چاہیے ۔ نون لیگ نے اس پر خاموشی اختیار کی تھی کہ اگر اپوزیشن راضی ہو جائے تو یہ آپشن برا نہیں ۔

پیپلز پارٹی نے واضح موقف اختیار کیا کہ سسٹم کے خلاف نہیں جائیں گے ۔ ایسی صورت میں نون لیگ کے لئے یہ آپشن ناممکن ہو گا مولانافضل الرحمن نے 31 تاریخ کا اعلان کیا بتایا جائے کیا یہ یک طرفہ اعلان ٹھیک تھا ۔ سسٹم کو بچانے کے ساتھ ساتھ یہ بھی تجویز تھی کہ چھ ماہ ایک سال حکومت کو دیکھا جائے ۔

انہوں نے کہا کہ مولانا فضل الرحمان نے نون لیگ کی نہ مانی اور نہ ہی پیپلز پارٹی کی ۔ پیپلز پارٹی نے کہا تھا کہ نہ دھرنے میں شامل ہونگے نہ حکومت گرانے میں شامل ہونگے ۔ اس وقت مولانا فضل الرحمان کا موقف اور پیپلز پارٹی کا موقف متضاد ہے ۔ دھرنے پر بھی مولانا فضل الرحمان اور پیپلز پارٹی کا موقف متضاد تھا ۔


ای پیپر