شہزادہ محمد بن سلمان کا دورہ پاکستان
17 فروری 2019 2019-02-17

سعودی عرب کے ولی العہد شہزادہ محمد بن سلمان وطن عزیز کے دور روزہ دورے پر پاکستان پہنچ گئے ہیں۔پاک سر زمین آمد پر وزیر اعظم عمران خان،اعلیٰ فوجی حکام اوروفاقی وزراء سمیت ان کا شایان شان استقبال کیا ۔پاک فضائیہ کے دستے نے انہیں سلامی پیش کی ،انہیں گارڈ آف آنر بھی پیش کیا گیا۔آج پیر کو ایوان صدر میں انہیں نشان پاکستان دینے کی تقریب ہو گی۔سعودی مہمان کی آمد پر اسلام آباد راولپنڈی کی شاہراہوں پر خیر مقدمی بنیرز لگائے گئے تھے۔سعودی اور پاکستانی پرچموں کی ایک بہار دیکھنے میں آئی۔دنیا میں فوربز ایک ایسا ادارہ ہے جو ہر سال طاقتور ترین شخصیات کی فہرست جاری کرتا ہے۔2013میں اس نے شہزادہ محمد بن سلمان کو دنیا کی طاقتور ترین شخصیات میں پیش کیا ہے۔ فوربز نے مڈل ایسٹ مسک فاؤنڈیشن کے ساتھ ان کے شاندار کام کی وجہ سے انہیں ’پرسنیلٹی آف دی ایئر‘ کا اعزازبھی دیا ہے۔مسک فاؤنڈیشن ایک غیرمنافع بخش تنظیم ہے جو سعودی نوجوانوں میں لرننگ اینڈ لیڈرشپ کی ترویج کرتی ہے اور انہیں سٹارٹ اپس کے آغاز میں مدد دیتی ہے۔ویژن 2030ء بھی سعودی ولی عہد محمد بن سلمان کا منصوبہ ہے جو سعودی معیشت کو نئے خطوط پر استوار کرنے کا پروگرام ہے۔اس پروگرام کا مقصد سعودی معیشت کا تیل پر انحصار ختم کرکے دیگر ذرائع آمدنی پر منتقل کرنا ہے۔ان کا ایک مشن سعودی عرب کو دنیا کیلئے کھولنا اور ملٹی نیشنل کمپنیوں کو سعودی عرب میں سرمایہ کاری کیلئے راغب کرنا بھی ہے۔ انہوں نے سعودی عرب کے صوبہ تبوک میں ’نیوم‘ کے نام سے ایک نئے اور جدید ترین شہرکاتصور بھی پیش کیا، جس میں ملٹی نیشنل کمپنیوں کو ٹیکنالوجی اوردیگرشعبوں میں سرمایہ کاری کی دعوت دی گئی ہے۔ محمد بن سلمان صرف معاشی اصلاحات کے ایجنڈے پر ہی کام نہیں کر رہے بلکہ شہری آزادیوں اور انسانی حقوق کے حوالے سے بھی ان کے اقدامات عالمی توجہ کا مرکز ہیں۔ان کے ویژن نے سعودی عرب کو سماجی و معاشی خوشحالی کے راستے پر ڈال دیا ہے ۔سعودی ولی عہد کی ملکی معیشت کا تیل پر دارومدار ختم کرنے کی کاوشوں نے ملک میں بیرونی سرمایہ کار ی کی راہیں ہموار کی ہیں۔وہ ایک اعتدال پسند اسلامی نقطہ نظر کے حامی ہیں جو سعودی عرب کو باقی دنیا کے ساتھ جوڑ کر چلنا چاہتے ہیں۔ ان کی جانب سے2017ء میں کرپشن کے خلاف کئے گئے کریک ڈاؤن کے نتیجے میں جہا ں سعودی مملکت آگے بڑھی اوراس سے سعودی خزانے میں 106ارب ڈالر کا اضافہ ہوا۔ولی عہد محمد بن سلمان کی پاکستان آمد پر وزیراعظم عمران خان نے اپنے پیغام میں کہا ہے کہ سعودی عرب کے ساتھ طویل سفارتی اقتصادی اور سماجی تعلقات ہیں ، ولی عہد کا دورہ باہمی اعتماد سے بھر پور تعلقات کو مزید مضبوط کرے گا۔ سعودی عرب ہمارے دل کے قریب ہے ، اقتصادی تعلقات سے سرمایہ کاری کے نئے مواقع کھلیں گے اور تین ارب ڈالر کی ادائیگی پر سعودی عرب کے شکر گزار ہیں۔ پاکستان اور سعودی عرب کی دوستی ہر کڑے وقت اور آزمائش میں پوری اتری ہے۔ سعودی ولی عہد کے دورہ پاکستان کے دوران گوادر میں آئل ریفائنری سمیت 20ارب ڈالر سے زائد کے منصوبوں پر دستخط کیے جائیں گے۔ پاکستان کے ساتھ خصوصی تعلقات کے حوالہ سے خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز کی طرف سے ولی العہد شہزادہ محمد بن سلمان کو مکمل تائید حاصل ہے۔

سعودی عرب کے پاکستان کے ساتھ تعلقات برادرانہ ہیں،حرمین شریفین ایک ایسا نشان منزل ہے جو اسلام اور مسلمانوں کے دلوں کی دھڑکن ہے اس وجہ سے ہر پاکستانی کے دل میں سعودی عرب کے لئے محبت،احترام کا رشتہ موجود ہے۔دونوں ممالک نے ہمیشہ ایک دوسرے کا ساتھ دیا۔ سعودی عرب نے قیام پاکستان سے قبل ہی پاکستانیوں کو مکمل تعاون فراہم کیا۔ پاک سعودی تعلقات بہت گہرے ہیں اور اس مثالی دوستی کو پوری دنیا جانتی ہے۔ پاکستان سعودی تعلقات میں ہر

گزرنے والے دن کے ساتھ مزید وسعت اور گہرائی پیدا ہورہی ہے۔ دونوں ملک مضبوط تاریخی ، دینی اور ثقافتی رشتے میں منسلک ہیں اور دونوں ملکوں کے عوام کے درمیان پرخلوص بھائی چارے کا رشتہ ہے۔ شہزادہ محمد بن سلمان کے دورہ پاکستان سے دونوں برادر ملکوں کے درمیان تعلقات میں مزید وسعت آئے گی اور تعاون میں اضافہ ہو گا۔ پاکستانی فوج اور قوم ارض الحرمین الشریفین کے دفاع ، سلامتی اور استحکام کیلئے کسی قربانی سے دریغ نہیں کریں گے۔ پاکستان اور سعودی عرب گزشتہ ستر سال سے باہمی دوستی کے لازوال رشتے میں بندھے ہوئے ہیں اور دونوں ایک دوسرے کے دکھ سکھ کے ساتھی ہیں۔ خادم الحرمین الشریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز نے پاکستان میں ایک منجھے ہوئے سفارتکارنواف سعید المالکی کو سفیر مقرر کررکھا ہے جو انتہائی کم عرصے میں پاکستانی حکام اور عوام میں مقبول ہو چکے ہیں وہ پاکستان دوست ہیں اسی لئے وہ پاکستان سے اور پاکستانی قوم ان سے محبت کرتی ہے۔سعودی سفیرنواف سعید المالکی کی محنت، سرگرمی اور ایمان کی حد تک پہنچے ہوئے خلوص اور دیانتدارانہ کوششوں سے پاکستان اور سعودی عرب کے عوام میں دوستی، محبت اور بھائی چارے کے جذبات میں مزید اضافہ ہوا۔سعودی عرب نے ہمیشہ پاکستان کے معاشی استحکام کیلئے کردار ادا کیا ہے، شہزادہ محمد بن سلمان کا دورہ پاکستان بہت کامیاب اور پاکستان کیلئے ثمرآور ثابت ہوگا۔

سعودی ولی عہد کے دورہ پاکستان کے موقع پر پاکستانی الیکٹرانک و پرنٹ میڈیا نے انہیں بھر پور کوریج دی،اخبارات نے ایڈیشن شائع کئے، ہم سعودی عرب کے شہزادہ لی العہد محمد سلمان کے دورہ پاکستان کے موقع پر دل کی گہرائیوں سے انہیں خوش آمید کہتے ہیں ہیں اور اپنی اس نیک خواہش کا اظہا رکرتے ہیں کہ برادر اسلامی ملک سعودی عرب یونہی امت مسلمہ کی قیادت و رہنمائی کا فریضہ سرانجام دیتا رہے اور اللہ تعالیٰ مسلمانوں کے دینی مرکز کو ہر قسم کی سازشوں سے محفوظ رکھے۔ آمین۔


ای پیپر