Maryam Nawaz's big announcement against Imran Khan
17 دسمبر 2020 (16:55) 2020-12-17

لاہور :پاکستان مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا نا اہل ،ناکام حکومت جب عوامی گھیرے میں آجاتی ہے تو اس طرح کے ہتھکنڈے پر اتر آتی ہے ،جب عوامی غصہ ،عوامی قہر جاگ اٹھتا ہے تو اس قسم کے انتظامات کار گرثابت نہیں ہوتے ،انہوں نے کہا بہت جلد پی ڈی ایم اور مسلم لیگ ن کی حکمت عملی کا فیصلہ ہو جائیگا ،مریم نواز کا کہنا تھا یہ حکومت چار سال کیا چار مہینہ بھی نہیں چل سکتی ۔

مریم نواز کا کہنا تھا سینٹ الیکشن قبل ازوقت کروانا حکومتی پریشانی واضح کر رہی ہے ،اگر پی ڈی ایم جلسوں سے ان کو فرق نہیں پڑتا تو الیکشن ایک ماہ پہلے کیوں کروائے جا رہے ہیں ،سینٹ الیکشن کے بارے میں فیصلے سے جاتی حکومت کو دوام نہیں ملے گا ،انہوں نے کہا جو بھی ہتھکنڈے استعمال کریں آپ کو گھر جانا پڑے گا اور جلد ی جانا پڑے گا ۔

مریم نواز نے کہا تحریک انصاف اور عمران خان نے آئین کا حلیہ بگاڑنے کا ٹھیکہ اپنے سر لے لیا ہے ،آپ کمزور ہو چکے ہیں آپ کو ایم این اے ،ایم پی اے پر اعتماد نہیں رہا ،آئین میں ترمیم کی ضرورت ہے ،آرڈیننس کے ذریعے بلڈوز نہیں کر سکتے ،الیکشن کمیشن اگر اب جعلی اقدامات کو مانتا ہے تو قوم سمجھے گی آپ جانبدار ہیں ،انہوں نے کہا چیئرمین ای سی پی کسی غیر آئینی اور غیر قانونی اقدام کو نہ مانیں ،حکومت اقدامات کا ہم کیا ایکشن لینگے یہ پی ڈی ایم پلیٹ فارم سے فیصلہ کرینگے ۔

مریم نواز نے عمران خان پر تنقید کرتے ہوئے کہا لاہور جلسے کے وقت آپ کتوں کو نہیں اپنے خوف کو بھلا رہے تھے ،اب سینٹ لیکشن اور آئین پاکستان کو بلڈوز کرنے کی تیاریاں ہو رہی ہیں لیکن پی ڈی ایم کے پلیٹ فارم کے ہوتے ہوئے ایسا نہیں ہونے دینگے ،مریم نواز نے کہا سینٹ الیکشن میں شو آف ہینڈ کیخلاف نہیں لیکن اس اعلان کے پیچھے ٹرانسپرنسی نہیں ۔

مریم نواز نے دو ٹوک الفاظ میں اعلان کرتے ہوئے کہا پہلے دن سے اس حکومت سے نہ بات چیت ہونی چاہیے تھی نہ کسی چیز میں سپورٹ کرنا چاہیے تھا ،چار سال تو بہت دور کی بات یہ حکومت اب چار مہینے میں بھی نہیں نکلا ل سکتی ،انہوں نے کہا اس وقت اپوزیشن جماعتوں میں ایکا ہے ،بلاول بھٹو نے مجھے ٹیلی فو ن کر کے لاڑکانہ میں شرکت کیلئے دعوت دی ہے ،کوشش ہے کہ لاڑکانہ میں بے نظیر بھٹو کے مزار پر حاضری دوں ۔


ای پیپر