فوٹو بشکریہ فیس بک

وزیر قانون پنجاب راجہ بشارت نے لاقانونیت کی انتہا کر دی
17 دسمبر 2018 (11:47) 2018-12-17

لاہور: مسلم لیگ قاف کے سینئر رہنما اور وزیر قانون پنجاب راجہ بشارت نے لاقانونیت کی انتہا کر دی۔ راجہ بشارت پر ن لیگ کے سابق رکن اسمبلی حنیف عباسی کی بیٹی اریبہ عباسی کا فرمائشی تبادلہ کرانے کا الزام سامنے آ گیا۔

سوشل میڈیا پر وائرل آڈیو ٹیپ میں مبینہ طور پر راجہ بشارت نے بے نظیر بھٹو ہسپتال راولپنڈی کے ایم ایس ڈاکٹر طارق نیازی کو حنیف عباسی کی بیٹی اریبہ عباسی کا سکن ڈیپارٹمنٹ میں واپس تبادلہ کرنے کا کہا۔ ڈاکٹر نیازی کے انکار پر راجہ بشارت کی برداشت جواب دے گئی اور ایم ایس کو دھمکیاں دینے پر اتر آئے۔

ڈاکٹر طارق نیازی نے نیو نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے تصدیق کی کہ آڈیو کال اصلی ہے۔ راجہ بشارت کا میڈیا کے سامنے آنے سے گریز صوبائی وزیر قانون کے ترجمان ڈاکٹر طارق کو قانون پڑھانے لگے، بولے راجہ بشارت سیاسی آدمی ہیں کوئی بات ہوئی بھی ہے تو ڈاکٹر طارق کو چاہیے تھا کال لیک نہ کرتے، انہوں نے غیر اخلاقی کام کیا۔

دوسری جانب ڈاکٹر اریبہ عباسی نے مستعفی ہونے کا اعلان کرتے ہوئے اپنا استعفیٰ سیکرٹری ہیلتھ کو ارسال کر دیا۔ ڈاکٹر اریبہ کہتی ہیں نوکری چھوڑنے کے لیے ان پر شدید دباؤ ہے۔ ایم ایس بے نظیر بھٹو ڈاکٹر طارق نیازی کا رویہ انتقامی کارروائی ہے۔

واضح رہے کہ وزیراعظم عمران خان نے اداروں میں سیاسی مداخلت نہ کرنے کا اعلان کیا تھا۔ لیکن انصاف سرکار میں بھی پرانا بیوپار۔ ڈی پی او پاکپتن کا تبادلہ ہو یا آئی جی اسلام آباد کا، سیاسی دباؤ نہ ہونے کے دعوے صرف دعوے ہی رہے۔


ای پیپر