Iran, Israel, incident, nuclear facility, United States, Javad Zarif
17 اپریل 2021 (18:13) 2021-04-17

واشنگٹن: امریکی صدر جوبائیڈن نے کہا ہے کہ جوہری معاہدے میں واپسی کے لیے ایران کو زیادہ رعایتیں نہیں دیں گے۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق امریکی صدر جوبائیڈن نے جاپانی وزیر اعظم کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ خوشی ہے ایران نے مذاکرات میں شمولیت جاری رکھی ہے تاہم ایران کے جوہری مذاکرات کے نتائج کے بارے میں کچھ کہنا قبل ازوقت ہو گا۔

انہوں نے کہا کہ میرا خیال ہے ہم اب بھی بات چیت کر رہے ہیں اور میں 2015 کے ایران جوہری معاہدے کا حامی رہا ہوں۔امریکی صدر نے کہا کہ جوہری معاہدے میں واپسی کے لیے ایران کو زیادہ رعایتیں نہیں دیں گے۔

اس سے قبل جاپان کے وزیر اعظم یوشی ہیدے سوگا نے وائٹ ہاوس میں امریکہ کے صدر جوبائیڈن سے ملاقات کی۔ یہ ملاقات جوبائیڈن کی وائٹ ہاوس پہنچنے کے بعد کسی غیر ملکی رہنما کے ساتھ پہلی براہ راست ملاقات تھی۔ دونوں رہنماوں نے ملاقات کے دوران ماسک پہن رکھے تھے۔

واضح دو روز قبل ہی سعودی عرب نے ایران کی جانب سے یورینیئم افزودگی کو 60 فیصد تک بڑھانے کے اعلان پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا تھا کہ عالمی برادری ایران کو جوہری پروگرام سے باز رکھنے میں اپنا کردار ادا کرے۔  

عالمی خبر رساں ادارے کے مطابق سعودی وزارت خارجہ کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ ایران کے جوہری پروگرام کو توسیع دینے کے عمل پر نظر رکھے ہوئے ہیں اور 60 فیصد تک یورینیئم افزودگی کے اعلان پر تشویش ہے۔

سعودی وزارت خارجہ نے ایران کو جوہری پروگرام پر خبردار کرتے ہوئے کہا کہ جوہری معاہدوں، عالمی برادری کے توقعات اور پابندیوں کی پاسداری کرے ورنہ خطے کا امن خطرے میں پڑجائے گا۔


ای پیپر