کرونا سے متعلق وزیر اعظم عمران خان نے اہم اعلان کر دیا
16 May 2020 (00:06) 2020-05-16

اسلام آباد : وزیر اعظم عمران خان ایک دفعہ پھر اہم اعلان کرتے ہوئے کہا کہ کرونا کی ویکسین کا ابھی کچھ پتہ نہیں لہذا ہمیں بھی کرونا کیساتھ رہنا سیکھنا ہو گا ،وزیراعظم عمران خان نے اعلان کیا ہے کہ تمام لوگ ایس او پیز کے تحت کاروبار کھولیں گے ، پہلے فکر تھی کہ لاک ڈاؤن کھولاتوہسپتالوں پرپریشرپڑےگا،دنیابھرکےماہرین کہہ رہےہیں کہ اس سال ویکسین نہیں آسکتی۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ حکومت کولوگوں کی مشکلات کااحساس ہے، جہاں لاک ڈاؤن ہواوہاں دوبارہ کیسزسامنےآگئے،، سنگاپور،کوریااورچین میں دوبارہ وائرس آگیا۔ اس موقع پر وزیراعظم نے طبی عملے کو خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ میڈیکل ورکرزدنیا بھر میں جہاد کر رہےہیں,ہمیں طبی عملےکی پریشانیوں کاپوری طرح احساس ہے، جب تک ویکسین نہیں آجاتی تب تک اس وائرس کو کنٹرول نہیں کیا جاسکتا، دیکھنایہ ہےکہ وائرس کےساتھ گزاراکیسےکرناہے ،پاکستان نےبھی دوسری دنیاکی طرح کورونا کےساتھ گزاراکرناہے۔

انہوں نے کہا کہ پہلےہی دو مہینے کالاک ڈاؤن ہوچکاہے،دیکھناہوگاکیا ہم لاک ڈاون کےمزید متحمل ہوسکتےہیں، پاکستان میں مشکل سے 8ارب ڈالرکاریلیف پیکج دیا،امریکا نے2ہزارارب ڈالر کا پیکج دیا ہے، ہم وہ لاک ڈاؤن نہیں کرسکتےجویورپ امریکااورچین نےکیا، ان ملکوں میں وہ غربت نہیں جوپاکستان میں ہے، کیا ہم لاک ڈاون کرکےبزنس بند کرسکتے ہیں،ہمارے ہاں مزدوراوردیہاڑی دار طبقہ ہے، لاک ڈاؤن سے15کروڑلوگ پاکستان بھرمیں متاثر ہیں۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ ہمارا اندازہ تھا کہ 14 مئی تک 92 ہزار695 کیسز ہونگے لیکن حکومتی اقدامات کی وجہ سے ملکی حالات کنٹرول میں ہیں۔ تاہم ابھی کیسوں میں اضافہ ہونا ہے، ہم اس کیلیے ذہنی طور پر مکمل تیار ہیں۔ ہو سکتا ہے جہاں کیسز بڑھیں،ان علاقوں کو لاک ڈاؤن کرنا پڑے۔

وزیراعظم نے بتایا کہ پبلک ٹرانسپورٹ غریب آدمی کی ٹرانسپورٹ ہے تاہم اس حوالے سے ابھی تک فیصلہ نہیں ہوسکا۔ ہم تمام فیصلے مشاورت سے کرتے ہیں۔ ہمارے کئی صوبوں میں خطرہ ہے ٹرانسپورٹ کھولنے سے کورونا تیزی سے پھیلے گا۔وزیراعظم نے کہاکہ لاک ڈاؤن سے کورونا وائرس ختم نہیں ہوگا اور تمام صوبوں سے درخواست کرتا ہوں کہ پبلک ٹرانسپورٹ کھول دیں۔


ای پیپر