فائل فوٹو

افغانستان اور ایران کے ساتھ ملکی سرحدیں مکمل طور پر بند کر دی گئیں
16 مارچ 2020 (10:31) 2020-03-16

اسلام آباد: کورونا وائرس کے پھیلاؤ کے پیشِ نظر افغانستان اور ایران کے ساتھ ملکی سرحدیں مکمل طور پر آج سے بند کر دی گئیں۔گزشتہ دنوں وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت قومی سلامتی کمیٹی کے اجلاس میں کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے ملکی مغربی سرحدیں 14 روز کے لیے مکمل طور پر بند کرنے کا فیصلہ کیا گیا تھا۔

 قومی سلامتی کمیٹی کے فیصلے کا اطلاق گزشتہ رات سے ہوگیا ہے جس کے بعد طورخم میں پاک افغان بارڈر کو بند کردیا گیا ہے جبکہ چمن میں بابِ دوستی بارڈر پر آمدورفت  پہلے ہی 14 روز سے معطل ہے۔

ایف آئی اے ذرائع کا کہنا ہے کہ پاک ایران سرحد پر امیگریشن آفس گزشتہ رات سے مکمل بند کر دیا جائے گا جبکہ تفتان بارڈر پر آمدو رفت پہلے ہی معطل ہے۔

دوسری جانب بھارت نے بھی پاکستان سے ملنے والی تمام سرحدیں گزشتہ رات سے تاحکم ثانی بند کرنے کا اعلان کررکھاہے جب کہ کرتارپور سے بھی زائرین کا داخلہ بند رہے گا۔

خیال رہے کہ ایران میں کورونا وائرس سے مزید 113 افراد ہلاک ہوئے ہیں جس کے بعد کل ہلاکتوں کی تعداد 724 ہوگئی ہے۔

ایران میں کورونا کے تصدیق شدہ مریضوں کی کل تعداد 1200 نئے کیسز آنے کے بعد 13 ہزار 938 ہوچکی ہے۔ بھارت میں کورونا کے مریضوں کی تعداد 112 تک جا پہنچی ہے جب کہ اب تک 2 مریض کورونا کے باعث ہلاک ہو چکے ہیں۔ ادھر افغانستان میں بھی کورونا سے متاثرہ افراد کی تعداد 16 ہو چکی ہے۔


ای پیپر