فوٹو بشکریہ فیس بک

میں آج بھی یہاں موجود ہوں پرویز مشرف کہاں ہیں؟ خواجہ آصف
16 جولائی 2019 (15:36) 2019-07-16

اسلام آباد: رہنما مسلم لیگ (ن) خواجہ آصف نے کہا ہے کہ معاشی بحران سے توجہ ہٹانے کیلئے شہباز شریف کو نشانہ بنایا جا رہا ہے۔ اپوزیشن کو ٹارگٹ کیا جا رہا ہے۔

قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے خواجہ آصف نے کہا کہ حکومت نے ایک سال میں 3 بجٹ پیش کئے، امپورٹ ہونے والے لوگوں نے ملک کا بجٹ تیار کیا۔ بجٹ پیش کرنے والے کو نوازا گیا، قومی اسمبلی میں کسی نے مہنگائی پر بات نہیں کی، مہنگائی سے عام آدمی کی زندگی اور کاروبار پر اثر پڑے گا۔ اس وقت ملک میں مہنگائی بڑھ رہی ہے، ہوسکتا ہے مہنگائی کے علاوہ ملک میں کوئی اور ایشو نہ رہے۔

انہوں نے مزید کہا کہ بدترین انتقامی کارروائیاں حکومت کی پہچان بن چکی ہیں۔ ملک میں اس وقت انڈر ٹیکر آکر بیٹھ گئے ہیں۔ سب کو اب یہ عذاب جھیلنا پڑے گا۔ رانا ثناءاللہ کیخلاف مقدمہ مضحکہ خیز ہے۔ سیاسی انتقام برے شگون ہوتے ہیں۔ نواز شریف پر کرپشن کا کوئی الزام نہیں پھر بھی قید ہیں۔ نواز شریف کا کیس عدالتوں میں ہے، ان شاء اللہ انصاف ملے گا۔ بھینس چوری کا مقدمہ ہماری سیاست میں ضرب المثل بن چکا ہے۔ اس جنگ میں نقصان آئین اور عوام کا ہوگا۔

رہنما مسلم لیگ (ن) نے کہا کہ ہم نے پرویز مشرف کے دور میں قید بھی کاٹی ہے۔ اٹک قلعہ میں ہتھکڑیوں کے ساتھ قید کاٹی ہے۔ کسی سے این آر او نہیں مانگیں گے۔ نواز شریف کا نام مٹانے والے لوگ ختم ہو جائیں گے۔ نواز شریف بار بارعوام کے ووٹوں سے منتخب ہوئے، میں آج بھی یہاں موجود ہوں پرویز مشرف کہاں ہیں؟


ای پیپر