الیکشن کمیشن نے صدارتی انتخاب کا شیڈول جاری کر دیا

16 اگست 2018 (16:04)

اسلام آباد : الیکشن کمیشن آف پاکستان نے صدارتی انتخاب کا شیڈول جاری کر دیا ۔ 4 ستمبر کو پاکستان کے آئندہ کے صدر کا انتخاب کیا جائے گا۔ پارلیمنٹ اور چاروں صوبائی اسمبلیوں میں ووٹ ڈالے جائیں گے، الیکٹرول کالج مکمل ہو گئے ہیں۔ حکومت اور اپوزیشن میں صدر کے انتخاب میں کانٹے دار مقابلہ متوقع ہے۔


تفصیلات کے مطابق اپوزیشن متحد رہی تو صدارتی انتخاب میں حیران کن نتیجہ دے سکتی ہے کیونکہ سینیٹ میں اپوزیشن کو دوتہائی اکثریت سے زائد کی برتری حاصل ہے۔ اسی طرح قومی اسمبلی اور صوبائی اسمبلیوں میں بھی اپوزیشن حکومت کے ووٹوں میں زیادہ فرق نہیں ہے جبکہ سندھ اسمبلی میں مرکز میں اپوزیشن جماعت پاکستان پیپلزپارٹی کی اکثریت ہے۔ صدارتی انتخاب کا شیڈول جمعرات کو جاری کیا گیا ہے۔ الیکشن کمیشن آف پاکستان کے مطابق صدر کے انتخاب کے لئے عیدالاضحی کے بعد 27 اگست تک کاغذات نامزدگی جمع ہو سکتے ہیں۔ 29 اگست تک جانچ پڑتال ہو گی۔ 30 اگست تک کوئی بھی صدارتی امیدوار دستبردار ہو سکے گا۔ اسی روز صدارتی امیدواروں کی حتمی فہرست شائع کر دی جائے گی۔ سینیٹ، قومی اسمبلی اور صوبائی اسمبلیوں کے اراکین رائے شماری میں حصہ لیں گے۔ پولنگ سٹیشنز، پارلیمنٹ ہاؤس اور چاروں صوبائی اسمبلیوں کی عمارتوں میں قائم کئے جائیں گے۔


4 ستمبر کو صدر کا انتخاب کیا جائے گا۔ پولنگ صبح 10 بجے سے شروع ہو کر چار بجے تک جاری رہے گی۔ نومنتخب صدر کے نام کا غیرسرکاری اعلان 4 ستمبر کی شام کو ہی کر دیا جائے گا۔سیاسی حلقوں کے مطابق سینیٹ، قومی اسمبلی صوبائی اسمبلیوں میں مضبوط اپوزیشن متحد رہی تو صدارتی انتخاب میں حیران کن نتیجہ دے سکتی ہے۔ سینیٹ اور سندھ اسمبلی میں مرکزی اپوزیشن جماعتوں کو برتری حاصل ہے۔ اسی طرح پنجاب اسمبلی میں بھی حکومت اپوزیشن کے ووٹوں میں زیادہ فرق نہیں ہے۔ بلوچستان میں بھی متحدہ مجلس عمل سمیت دیگر اپوزیشن جماعتوں کے متعدد ووٹ ہیں۔ خیبرپختونخوا اسمبلی میں بھی اپوزیشن کے پاس 33 سے زائد ووٹ ہیں۔

مزیدخبریں