File Photo

 کالاہرن.... دَبنگ خان کی گرفتاری اور رہائی
16 اپریل 2018 (20:17) 2018-04-16

اقراءلیاقت: قارئین جیسا کہ آپ سب کوہی معلوم ہے کہ ہرن وہ جا نور ہے جسے دیکھ کر معصو میت کا احساس ہو تا ہے کیونکہ اُس کے چہرے سے معصومیت جھلکتی ہے ۔اورٹائیگر کو جنگل کا سب سے خونخوار جانور کہا جاتاہے۔ جس سے جنگل کا ہر جانور ڈرتا ہے۔ہم نے ہمیشہ سے ہی یہ سنا ہے اور بلکہ دیکھا بھی ہے کہ ٹائیگر ہمیشہ ہرن کی معصو میت کی وجہ سے اس کا شکار کر لیتا ہے ۔مگر سلمان خان کی گرفتاری سے یہ بات غلط ثابت ہو گئی۔سلمان خان کی گرفتاری سے لگتا ہے کہ اس بار ٹائیگرنے نہیں بلکہ ہرن نے ٹا ئیگر کا شکار کیا ہے۔جنگل کاخونخوار جانور ٹائیگر جس سے سب ڈرتے ہیں اس بار بالی وڈ کا وہی ٹائیگر معصوم ہرن کی وجہ سے دو دن کے لئے سلاخوں کے پیچھے رہا۔بلکہ اس سے پہلے بھی بالی وڈ کے ٹائیگر سلمان خان کو ہرن کے شکار کے باعث بہت سے مسائل کا سامنا کرنا پڑا ۔اس طرح سلمان خان کو ہرن کا شکار بہت مہنگا پڑ ا۔ہرن کی وجہ سے بالی وڈ کے ٹائیگر کو سلاخوں کے پیچھے قید ہو نا پڑا۔ قارئین ہم جس ہرن کی بات کر رہے ہیں یہ کوئی عام ہرن نہیں بلکہ بھارت کے شہر راجستھان میں پایا جانے والا ” کالا ہرن“ ہے جو بہت نایاب ہیں۔ وقت گزرنے اور آبادی بڑھنے کے ساتھ ساتھ ان کی آبادی میں بھی نمایاں کمی ہو رہی ہے۔عام طور پر یہ کا لا ہرن بھارت،پاکستان اور نیپال میں پا یا جاتاہے۔


کا لے ہرن کو بھارت میں ”انڈین اینٹی لوپ“ بھی کہا جاتا ہے،کالے ہرن کے لگاتارشکار سے بھارت کی نسل کو بچانے کے لئے قانون کا سہارا لیا گیا ہے اور اُسکے شکار پر پا بندی عائد کر دی گئی ۔بعض علاقوں میں اس کی تھوڑی بہت آبادی ہے جبکہ محفوظ علاقوں میں اُن کی تعداد بڑھ رہی ہے۔ کچھ علاقے ایسے بھی ہیں جہاں یہ کالے ہرن فصلوں کو نقصان پہنچاتے ہیں۔ کالے ہرن کی خاص بات یہ ہے کہ وہ وقت اور حالات کے مطابق خود کو بدلنا سیکھ گئے ہیں۔ لیکن اس کے باوجود بڑھتی ہوئی انسانی آبادی، پالتو جانوروں اور معاشی ترقی کی وجہ سے ان کے لئے خطرات بڑھ رہے ہیں۔ کالا ہرن شیڈیول ون میں آنے والا جانور ہے اس لئے اس کے شکار پر مکمل پابندی ہے۔خاص بات یہ ہے کہ نر کالا ہرن رنگ بھی بدلتا ہے۔ مون سون کے آخر تک نر ہرنوں کا رنگ خاصا کالا ہو تاہے لیکن سردیوں میں یہ رنگ ہلکا پڑنے لگتا ہے اور اپریل کی شروعات تک ایک بار پھر بھورا ہو جاتا ہے۔کالے ہرن عام طور پر گھاس چرتے ہیں، لیکن تھوڑی بہت ہریالی والے ریگستانی علاقوں میں بھی پائے جاتے ہیں۔کالے ہرن کے ساتھ مسئلہ یہ ہے کہ ان کے علاقے سمٹ رہے ہیں کیونکہ یہ گھنے جنگلوں کا جانور نہیں بلکہ میدانی علاقوں کا جانور ہے۔انڈیا میں کالے ہرن عام طور پر راجستھان، پنجاب، مدھیہ پردیش، مہاراشٹر اور گجرات میں پائے جاتے ہیں۔


جی قارئین یہ تو تھے کالے ہرن ،تو اب بات کر تے ہیں سلو بھائی کی اور بتاتے ہیں کہ سلو بھا کا ان کالے ہرنوں سے کیا تعلق ہے ؟سلمان خان اور کالے ہرن کا نام جب ایک ساتھ آتا ہے تو اس کا مطلب ہے کہ بالی وڈ کا ٹائیگرمشکل میں ہے۔بالی وڈ اداکار سلمان خان پر راجستھان کے شہر جودھ پور میں دو کالے ہرن شکار کرنے کا الزام ہے۔ مگر فقط یہ الزام نہیں ہے بلکہ یہ بات سچ ہے کہ سلمان خان نے واقعی 20سال قبل ان ہرنوں کا شکار کیا تھا۔یہ واقعہ 26 ستمبر 1998 کا ہے۔ اس کے دو دن بعد 28 ستمبر کو سلمان پر گھوڑا فارم میں ایک اور بلیک بک کے شکار کا الزام لگایا گیا۔اسی سال دو اکتوبر کو بشنوئی فرقے نے سلمان خان کے خلاف مقدمہ درج کرایا اور دس دن بعد انھیں گرفتار کر لیا گیا۔سلمان خان کو ضمانت مل گئی مگر تب سے یہ معاملہ چلا آرہا ہے۔ گزشتہ دنوں اس کیس کی عدالت میں سماعت تھی۔ جس میں سلمان خان کو عدالت سے ہی گرفتار کر لیا گیا۔کالے ہرن کے شکار کے معاملے نے 20سال بعد بھی سلمان خان کی جان نہیں چھوڑی اور ان کا لے ہرنوں کے شکار کا ازالہ بالی وڈ کا ٹائیگر ابھی تک کر رہا ہے۔اس کیس کا ابھی تک چلنا ایسا ہے کہ 20سال بعد بھی گڑھے مردے اکھاڑے جا رہے ہیں ۔عدالتی فیصلے کے مطابق سلمان خان کو غیرقانونی نایاب کالے ہرن کے شکارکیس میں5 سال قید کی سزاہو ئی۔ شریک ملزمان میں سیف علی خان ، سونالی باندرے، تبواور نیلم کو بری کردیا گیا۔ سلمان خان کو 10ہزار روپے جرمانہ بھی ادا کرنا پڑا۔ گرفتاری کے بعد سلمان خان کو جودھ پور جیل منتقل کیا گیا تھا۔واضح رہے کہ 20 سال قبل فلم ’ہم ساتھ ساتھ ہیں“ کی شوٹنگ کے دوران سلمان اور ساتھی اداکار اوراداکارا¶ں نے پابندی کے باوجود نایاب کالے ہرن کا شکار کیا تھا۔گاڑی میں سلمان خان کے علاوہ فلم کی کاسٹ میں شامل سیف علی خان ، تبو، سونالی باندرے اور نیلم بھی موجود تھے جنہیںکورٹ نے با عزت بری کردیا ۔ ان سب کے خلاف تحفظ جنگلی حیات ایکٹ کے تحت مقدمہ درج تھا جبکہ سلمان خان کیخلاف غیرقانونی شکار اور اسلحہ ایکٹ سمیت 4 مقدمات درج کیے گئے ۔سال 1998 میں درج کیے جانے والے اس مقدمے کا فیصلہ عدالت نے 28 مارچ 2018 کو محفوظ کیا تھا۔فیصلے کے بعد سلمان خان کے وکیل کا کہنا ہے کہ اداکار کو ضمانت پر رہائی مل جائے گیاور ایسا ہی ہوا ۔ سلمان خان کو دو دن جودھ پورسینٹرل جیل میں گزارنے کے بعد رہائی مل گئی۔عدالت نے سلمان خان کی درخواست ضمانت پر 25، 25 ہزار کے 2 مچلکے جمع کرانے کا حکم دیا اورساتھ ہی ان کے بغیر اجازت ملک چھوڑنے پر پابندی عائد کردی ۔

عدالت نے انہیں 7 مئی کو دوبارہ عدالت میں پیش ہونے کا حکم دیا ہے۔20سال پہلے سلمان خان کے خلاف مقامی برادری نے مقدمہ درج کروایا تھا جو اس ہرن کو مقدس قرار دیتے ہیں اور راجستھان میں ان کا شکار غیر قانونی ہے۔جب سلما ن خان گرفتار ہوئے تو کہا جانے لگا کہ بھارتی فلم انڈسٹری کا اربوں کا سرمایہ خطرے میں پڑ گیا ہے، سلمان خان اس وقت اہم ترین اور میگا بجٹ فلمز کی شوٹنگ اور پروڈکشن میں مصروف تھے، جبکہ وہ آنے والے مہینوں میں میگا بجٹ کے ٹی وی منصوبوںمیں بھی نظر آنے والے ہیں۔جس میں سونی ٹی وی کا ری ایلیٹی شو” دس کا دم “ اور ”کلرز ٹی وی کامیگا ری ایلیٹی شو ”بگ باس“ شامل ہیں ۔مگر اب فی الحال اس بارے میں کچھ بھی نہیں کہا جا سکتا کہ سلمان خان ان ٹی وی پروجیکٹس میں نظر آتے ہیں یا نہیں۔ فی الحال تو سلو بھائی کی ضما نت منظور ہو گئی ہے مگر مستقبل میں عدالت کیا فیصلہ سناتی ہے اس بابت کچھ بھی کہنا قبل از وقت ہو گا۔ویسے اس بات کا تو ہم اندازہ بھی نہیں لگاسکتے۔اگر سلمان خان دوبارہ گرفتار ہو گئے تو ضرور بالی وڈ فلم انڈسٹری کو اربوں روپے کے نقصان کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔ایک رپورٹ کے مطابق اس وقت سلمان خان یومیہ کم سے کم 65 لاکھ 47 ہزار روپے کماتے ہیں۔ سلمان خان کی گزشتہ برس یعنی 2017 تک مجموعی ملکیت کا تخمینہ 1480 کروڑ روپے تھا، رواں برس ان کی دولت میں بے تحاشا اضافے کا امکان تھا۔فلم ریس تھری اور بھارت کی ریلیز میں بھی نقصان کا اندیشہ ظاہر کیا جا رہا ہے۔مگر اس بات کا اندازہ تو تب ہی لگایا جا سکتا ہے جب یہ فلمیں ریلیز ہوں گی۔عدالت کی سزا سے سو کروڑ کلب کی سب سے زیادہ فلمیں دینے والے سلو بھائی کو پہلا دھچکا لگ گیا۔فیصلے کے بعد سلمان خان کی کمپنی کے شیئرز پندرہ فی صد گرگئے۔بڑے بجٹ سے بننے والی دونوں فلموں”ریس تھری “ اور ”بھارت“کو عید اور کرسمس پرریلیز کیا جائے گا۔

سلمان خان پر آنے والی اس مصیبت کے بعد ان کے سپر ہٹ ہونے پر کوئی فرق پڑے گا یہ نہیں؟ اس سوال کے جواب کےلئے ہمیں فلم کی ریلیز کا انتظار کر نا پڑے گا۔ابھی تو لو گوں میں اس سے متعلق بہت سی پیش گوئیاں کی جا رہیں ہیں ۔یہ تووقت آنے پر ہی پتا لگے کاکہ لو گوں کی یہ پیش گو ئیاں صحیح ثابت ہوتی ہیں یا غلط ؟سلمان خان جن دو مشہور ٹی وی پروگرامز میں ہر سال نظر آتے ہیںان کے مستقبل پربھی اب سوالیہ نشان لگ گیا ہے۔سلمان خان کے مسئلہ پر بالی ووڈ ستارے بھی تشویش کا شکارہیں۔سلو بھائی کی گرفتاری پر اداکار شاہ رخ خان ،عامر خان اور دیگر سٹارزنے بھی ٹوئٹر پراپنے اپنے خیالات کا اظہار کیا۔ بالی وڈ کے دبنگ خان کی گرفتاری پر پاکستانی اداکاروں نے بھی اپنے خیالات کا اظہار کیا اور کہا ہے کہ امید ہے کہ سلو بھائی جلد ہی اس مسئلے سے مستقل طور پر باہر نکل آئیں گے۔ ان پاکستانی سٹارز میںحمائمہ ملک، عروہ حسین اور فیر وزخان شامل ہیں۔بالی وڈ اور لالی وڈ سٹارز کے علاوہ سلمان خان کے تمام فینز ،چاہنے والوں کی بھی یہی دعا ہے کہ سلمان خان جلد اس مسئلے سے مستقل طور پر باہر نکل آئیں ۔


ای پیپر