پارٹی نواز شریف کی قیادت میں متحدہے:احسن اقبال
15 اکتوبر 2019 (17:13) 2019-10-15

اسلام آباد :پاکستان مسلم لیگ ن کے جنرل سیکرٹری احسن اقبال نے کہا ہے کہ جمعیت علمائے اسلام (ف )نے دھرنے کا نہیں آزادی مارچ کا اعلان کر رکھا ہے دھرنے کا لفظ تو میڈیا لے کر آیا ہے، پارٹی نوازشریف کی قیاد ت میں متحد ہے ، پارٹی میں دھڑے بندیوں کے حوالے سے خبر بے بنیاد ہے ،مولانا فضل الرحمان کی پالیسی پارٹی کے اجلاس میں مزید کچھ چیزیں سامنے آئیں گی۔

احسن اقبال کا کہنا تھا کہ غیر جمہوری اور غیر آئینی راستہ اس ملک کے لیے خطرناک ثابت ہو گا،ایک انٹرویومیں جنرل سیکرٹری پاکستان مسلم لیگ ن احسن اقبال نے کہا کہ غلط خبریں چلائی جا رہی ہیں کہ مسلم لیگ (ن )میں دھڑے بندیاں ہو گئی ہیں لیکن پارٹی نواز شریف کی قیادت میں متحدہے۔انہوں نے کہا کہ پارٹی میں جمہوریت ہے اور اجلاسوں کے دوران لوگ اپنی رائے کا اظہار کرتے ہیں جو سب کا حق ہے تاہم جب کوئی فیصلہ ہو جاتا ہے سب اس پر متفق ہوتے ہیں۔

نواز شریف نے ایک ہی خط شہباز شریف کو لکھا گیا تھا اس کے علاوہ کوئی خط نہیں لکھا گیا۔ احسن اقبال نے کہا کہ شہباز شریف کی پارٹی سے صدارت سے علیحدگی کی تمام خبریں غلط ہیں۔ خود جے یو آئی ف کی قیادت بھی دھرنے میں بیٹھنے کی مخالف ہے وہ آزادی مارچ کر رہے ہیں دھرنے کا لفظ تو میڈیا نے پیدا کیا ہے۔ جے یو آئی ف کے رہنما کہہ رہے ہیں دھرنے کا لفظ استعمال نہیں کیا جائے یہ صرف آزادی مارچ ہے۔انہوں نے کہا کہ پارٹی رہنماو¿ں نے نواز شریف کے خط پر مکمل اعتماد کا اظہار کیا ہے۔

مولانا فضل الرحمان کی پالیسی پارٹی کے اجلاس میں مزید کچھ چیزیں سامنے آئیں گی اور 16 اکتوبر کو مولانا فضل الرحمان لاہور میں شہباز شریف سے ملاقات کریں گے۔مسلم لیگ (ن )کے رہنما نے کہا کہ نواز شریف جمہوری طریقے سے احتجاج کے حامی ہیں اور وہ چاہتے ہیں تمام جماعتیں اس احتجاج میں شریک ہوں اور ہم منظم طریقے سے اپنا احتجاج ریکارڈ کرا سکیں جو اثر انداز بھی ہو۔انہوں نے کہا کہ آزادی مارچ مکمل طور پر جمعیت علمائے اسلام (ف) کا پروگرام ہے اور دیگر حزب اختلاف کی جماعتوں سے صرف تعاون مانگا گیا ہے جو آزادی مارچ میں تعاون کر رہی ہیں۔


ای پیپر