Gilgit-Baltistan elections, Raja Shahbaz Khan, fair elections
کیپشن:   فائل فوٹو
15 نومبر 2020 (10:50) 2020-11-15

سکردو: گلگت بلتستان انتخابات میں ووٹنگ کا سلسلہ جاری، اپوزیشن جماعتوں نے چیف الیکشن کمشنر راجہ شہباز خان سے شفاف انتخابات کے انعقاد کا مطالبہ کر دیا۔

تفصیلات کے مطابق انتخابی مہم کے دوران پاکستان مسلم لیگ ن کی نائب صدر مریم نواز اور پیپلز پارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا تھا کہ انہیں انتخابات میں دھاندلی کے خدشات ہیں ، دونوں رہنماوں نے دھاندلی کے ڈر کے باوجود جیت کا دعوی بھی کیا تھا۔ جس پر راجہ شہباز خان نے تمام سیاسی جماعتوں کو صاف اور شفاف الیکشن کے انعقاد کی یقین دہانی کروائی تھی۔

ادھر وزیراطلاعات شبلی فراز نے کہا کہ گلگت بلتستان میں ہماری جیت اپوزیشن کی چیخ و پکار سے واضح ہے۔ عجیب رویہ ہے کہ جس الیکشن میں اپوزیشن کامیاب ہو وہ درست ورنہ سارا عمل غلط ہے۔

انہوں نے کہا کہ گلگت بلتستان میں تمام سیاسی جماعتوں نے انتخابی مہم میں حصہ لیا۔ لیکن گلگت بلتستان کی عوام نے پی ٹی آئی کو بہت پزیرائی دی۔ شبلی فراز نے کہا کہ اپوزیشن دھاندلی کا ڈھونگ رچا کر اپنی شکست کو نیا رنگ دینے کی کوشش کر رہی ہے۔

وزیر اطلاعات نے کہا کہ گلگت بلتستان کے عوام نے وزیراعظم سے اپنی بھر پور محبت کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کے امیدوار گلگت بلتستان سے کامیاب ہوں گے کیونکہ انہوں نے بہت محنت کی ہے۔

شبلی فراز نے میڈیا سے درخواست کی کہ وہ اپوزیشن کے ڈھونگ کو غلط ثابت کرنے کیلئے پولنگ کے عمل کی بھر پور کوریج کرے۔ انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کے ایک وزیر نے تجویز دی تھی کہ پولنگ اسٹیشنز پر کیمرے بھی لگا دیئے جائیں۔

وفاقی وزیر نے کہا کہ ماضی کی حکومتوں نے 10 سال میں گلگت بلتستان کے مسائل کے حل کیلئے کچھ نہیں کیا۔ پی ٹی آئی نے شفاف اور غیر جانبدار الیکشن کی جدو جہد کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ اپوزیشن اقتدار کی ہوس میں مبتلا ہیں، ان کی سوچ جمہوری نہیں، جنہوں نے اپنے ادوار میں کام نہیں کیا وہ اب کیا کریں گے۔


ای پیپر