کشمیر کے مسئلہ پر چین کا زبردست اعلان ،مودی کی نیندیں حرام
15 جنوری 2020 (23:44) 2020-01-15

اسلام آباد:پاکستان میں چین کے سفیر یاﺅ جنگ نے کہا ہے کہ مسئلہ کشمیر کو تاریخی طور پر نظر انداز کیا گیا ، یہ عالمی انصاف کا مسئلہ ہے ، چین مسئلہ کشمیر کے معاملہ اور کشمیر عوام کی جائز کازکےلئے ہمیشہ پاکستان کی حمایت جاری رکھے گا ، مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق منصفانہ طریقے سے حل ہونا چاہیے .

بھارت کی جانب سے کشمیر کے حوالے سے اٹھائے جانے والے یکطرفہ اقدام پر بھی ہمارے تحفظات ہیں ، سال 2020میں چین پاک تعلقات نئی بلندیوں کو چھوئیں گے ، چین پاکستان اقتصادی راہداری (سی پیک) کے تحت رواں سال میں سماجی ومعاشی اور زرعی ترقی کے منصوبے مکمل کئے جائیں گے ، پاکستان کو غربت کے خاتمہ کےلئے معاونت فراہم کی جائے گی ، پاکستان کے مختلف شعبوں میں باہمی تعلقات کو مستحکم طریقے سے فروغ دیا جائے گا،چینی خوداختیار علاقہ سنکیانگ یغور میں مسلمان خوشحال زندگی گزار رہے ہیں ۔ چینی سفیر نے بدھ کے روز ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مسئلہ کشمیر کو تاریخی طور پر نظرانداز کیا گیا، چین مسئلہ کے پر امن حل کےلئے ہمیشہ پاکستان کی حمایت کرے گا ، مسئلہ کشمیر کو یو این سیکیورٹی کونسل کی قراردادوں کے مطابق منصفانہ طور پر حل ہونا چاہیے .

مسئلہ کشمیر بین الاقوامی انصاف کا متقاضی ہے ، امید ہے کہ بین الاقوامی برادی اس سلسلے میں اپنی ذمہ داریاں پوری کرتے ہوئے انصاف پر مبنی فیصلہ کی حمایت کرے گی ، چین کو کشمیر میں بھارتی اقدامات کے حوالے سے بھی تشویش ہے ،رواں سال میں دونوں ممالک کے مابین باہمی تعلقات مستحکم طریقے سے فروغ پائیں گے ، دونوں ممالک مختلف شعبوں میں تعاون کو آگے لیکر جائیں گے ، سی پیک کے دوسرے مرحلے کے تحت پاکستان میں سماجی ، معاشی اور زرعی ترقی کے پروگرام فروغ دیے جائیں گے ،رواں سال دونوں ممالک کے مابین تجارت کا حجم بڑھانے کے بھی بہترین مواقع ہیں ، دونوں ممالک بہترین ہمسایہ ، بہترین دوست اور بہترین شراکت دار کے طور پر اپنے مستقبل کی تعمیر کریں گے ، دونوں ممالک باہمی اعتماد کے ساتھ اپنی علاقائی خودمختاری کا تحفظ کریں گے، چین اور پاکستان مشترکہ تعمیر وترقی کےلئے ہمیشہ ایک دوسرے کا ساتھ دیں گے۔

انہوں نے کہا کہ چینی خوداختیار علاقہ سنکیانگ یغور میں مسلمان خوشحال زندگی گزار رہے ہیں ، گزشتہ ستر سالوں کے دوران چین نے مسلمانوں کی آبادی اور مساجد کی تعداد میں بہترین اضافہ ہوا، بین الاقوامی برادری اور خصوصی طور پر مغربی میڈیا سنکیانگ اور ہانگ کانگ کے حوالے سے بے بنیاد پراپیگنڈا کر رہے ہیں تاہم چین کسی بھی قسم کے پروپیگنڈا سے خوفزدہ نہیں ہے ، چین نے گزشتہ ستر سالوں کے دوران پرامن طریقے سے تعمیروترقی کا عمل یقینی بنایا ہے اور آئندہ بھی پر امن بقائے باہمی اصولوں کے تحت چین تعمیروترقی کا عمل آگے بڑھاتے ہوئے اپنے شراکت داروں کے اس کے فوائد پہنچائے گا ۔


ای پیپر