بھارتی یوم آزادی‘مقبوضہ‘آزاد کشمیر میں یوم سیا ہ منایا گیا

15 اگست 2018 (17:48)

سرینگر،مظفر آباد:کنٹرول لائن کے دونوں اطراف اور دنیابھر میں بسنے والے کشمیریوں نے بھارتی یوم آزادی پر یوم سیاہ کے طور پر منایا‘اس ضمن میں مقبوضہ کشمیر میں بھارت مخالف آواز دبانے کیلئے درندہ صفت فورسز کی اضافی نفری بھی تعینات کی گئی۔

احتجاج سے روکنے کیلئے حریت رہنما یاسین ملک کو گرفتار جبکہ سید علی گیلانی سمیت دیگر حریت رہنماوں کو نظر بند کر دیا گیا اور وادی میں انٹرنیٹ سروس بھی معطل کی گئی ۔کشمیر میڈیا سروس کے مطابق بد ھ کے روز بھارتی یوم آزادی کے دن کو مقبوضہ کشمیر میں کشمیریوں نے حریت قیادت کی کال پر یوم آزادی کو یوم سیاہ کے طور پر منایا‘ جس کا مقصد بھارت کے غاصبانہ قبضے پر عالمی برادری کی توجہ دلاناتھا ۔

سید علی گیلانی‘ میر واعظ عمر فاروق اور یاسین ملک کی کال پر وادی میں مکمل شٹر ڈاون ہڑتال کی گئی ‘ جس کے دوران تمام دکانیں، کاروباری مراکز، اسکول بند اور سڑکیں سنسان تھیں ۔قابض انتظامیہ نے مقبوضہ کشمیر کو فوجی چھاونی میں تبدیل کئے رکھااور بھارت مخالف احتجاج روکنے کیلئے جگہ جگہ بھارتی فورسز کے اہلکار جبکہ حساس مقامات پر شارپ شوٹر تک تعینات کیے گئے ‘ وادی میں انٹر نیٹ سروس بھی معطل رہی ۔

احتجاج میں شرکت سے روکنے کیلئے حریت رہنما یاسین ملک کو بھارتی پولیس نے گرفتار ‘جبکہ سید علی گیلانی سمیت دیگر رہنماوں کو نظر بند کردیا گیا ۔واضح رہے کہ اس سے قبل گزشتہ روز پاکستان کے 71ویں یوم آزادی کا جشن مقبوضہ کشمیر میں انتہائی جوش و خر وش سے منایا گیا‘پابندیوں کے باوجود کشمیری طالب علموں نے سبز ہلالی پرچم لہراتے ہوئے آزادی اور پاکستان کے حق میں نعرے بازی کی تھی ۔

مزیدخبریں