فوٹوبشکریہ فیس بک

قومی اسمبلی کے سپیکر اور ڈپٹی سپیکر کا انتخاب آج ہو گا
15 اگست 2018 (09:10) 2018-08-15

اسلام آباد: نئی قومی اسمبلی کے سپیکر اور ڈپٹی سپیکر کا انتخاب آج ہو گا۔ سپیکر کے عہدے پر پاکستان تحریک انصاف کے اسد قیصر اور اپوزیشن اتحاد کے سید خورشید شاہ میں مقابلہ ہو گا۔ ڈپٹی سپیکر کے لیے تحریک انصاف کے قاسم سُوری اور مولانا اسعد محمود میں جوڑ پڑے گا۔

جانچ پڑتال کے بعد چاروں امیدواروں کے کاغذات نامزدگی منظور کر لیے گئے ہیں۔ عددی اعتبار سے تحریک انصاف کو برتری حاصل ہے۔ خفیہ رائے شماری میں اپنے اراکین کو منحرف ہونے سے بچانا بڑا چیلنج ہو گا۔

تحریک انصاف کو ایم کیو ایم، بلوچستان عوامی پارٹی، بی این پی مینگل، جی ڈی اے، ق لیگ، عوامی مسلم لیگ اور جمہوری وطن پارٹی کی حمایت حاصل ہے۔

تحریک انصاف کی قومی اسمبلی میں 151 نشستیں ہیں جبکہ ایم کیو ایم کی 7، بلوچستان عوامی پارٹی کی 5، بی این پی مینگل کی 4، جی ڈی اے کی 3، عوامی مسلم لیگ اور جمہوری وطن پارٹی کی ایک، ایک نشست ہے۔ 4 میں سے 2 آزاد ارکان نے بھی تحریک انصاف کو حمایت کی یقین دہانی کرا رکھی ہے۔ یوں تحریک انصاف کے مجموعی ووٹوں کی تعداد 177 بنتی ہے۔

دوسری جانب سید خورشید شاہ اور مولانا اسعد محمود کو مسلم لیگ ن کے 81، پیپلز پارٹی کے 53، ایم ایم اے کے 15 اور اے این پی کے ایک رکن کی حمایت حاصل ہے۔ اس طرح اپوزیشن اتحاد کے امیدواروں کو 150 کے قریب ووٹ مل سکتے ہیں۔ ووٹوں میں سے اکثریت حاصل کرنے والا رکن سپیکر قومی اسمبلی منتخب ہو جائے گا۔ سپیکر ایاز صادق نومنتخب سپیکر سے حلف لیں گے۔ نیا سپیکر اپنی نشست سنبھالنے کے بعد ڈپٹی سپیکر کا انتخاب کرائے گا۔

 

 

 

 

 

 


ای پیپر