افغانوں کیلئے قبول مذاکرات ہی افغانستان میں دائمی امن و استحکام کیلئے اہم ہے :ترجمان دفتر خارجہ
15 اپریل 2021 (21:26) 2021-04-15

اسلام آباد :دفتر خارجہ کے ترجمان زاہد حفیظ چوہدری کا کہنا ہے کہ پاکستان نے ہمیشہ افغانستان میں پائیدار امن و استحکام کی کوششوں کی حمایت اور ان کی سہولت کاری کی ہے ،ہم سمجھتے ہیں کہ افغانستان کے تنازعے کاکوئی فوجی حل نہیں اور افغان قیادت میں افغانوں کو قبول مذاکرات کے ذریعے سیاسی تصفیہ ہی افغانستان میں دائمی امن اور استحکام کیلئے اہم ہے ۔

ترجمان دفتر خاجہ نے میڈیا کے سوالات کے جواب میں کہا کہ امریکی صدر جو بائیڈن کا بیان ہماری نظر سے گزرا ہے جس میں انہوں نے یکم مئی 2021 سے افغانستان سے امریکی فوج کے انخلاء کا اعلان کیا ہے جو 11 ستمبر 2021 تک مکمل ہوگا۔ ترجمان دفتر خارجہ نے کہاکہ پاکستان نے ہمیشہ افغانستان میں پائیدار امن و استحکام کی کوششوں کی حمایت اور ان میں سہولت کاری کی ہے، ہم سمجھتے ہیں کہ افغانستان کے تنازعے کا کوئی فوجی حل نہیں ہے ۔

ترجمان دفتر خارجہ کا کہنا تھا  اس مقصد کے حصول کے لئے 29 فروری 2020 کو امریکہ طالبان معاہدے نے افغانوں کے درمیان جامع معاہدے کی بنیاد رکھ دی ہے جس میں افغانستان میں تشدد کے خاتمے کے لئے مستقل جنگ بندی بھی شامل ہے۔ ترجمان نے کہاکہ ہمارے نکتہ نگاہ سے یہ انتہائی اہم ہے کہ افغانستان سے غیرملکی افواج کا انخلاء امن عمل میں پیش رفت کے ساتھ ہونا چاہئے۔ ہمیں امید ہے کہ ترکی میں افغان قیادت کا آئندہ اجلاس افغانوں کے لئے ایک اہم موقع فراہم کرے گا کہ وہ سیاسی تصفیہ کے حصول کے لئے پیش رفت کریں۔

وزارت داخلہ کی طرف سے جاری بیان میں کہا گیا کہ  اس ضمن میں ہم افغان فریقین کے اشتراک عمل سے افواج کے ذمہ دارانہ انخلاء کے اصول کی حمایت کرتے ہیں۔ ہم یہ بھی امید کرتے ہیں کہ امریکہ افغان رہنمائوں پر زور دیتا رہے گا کہ افغانستان میں سیاسی تصفیہ کے حصول کے اس تاریخی موقع سے استفادہ کریں۔

 انہوںنے کہاکہ پاکستان نے ہمیشہ اعادہ کیا ہے کہ افغانستان میں امن واستحکام ہمارے اپنے مفاد میں ہے۔ پاکستان پرامن، مستحکم، متحد، جمہوری، خودمختار اور خوشحال افغانستان کے لئے اپنی دائمی وابستگی اور عزم کا اعادہ کرتا ہے۔ تنازعے کے بعد کے مرحلے میں بین الاقوامی برادری کی افغانستان میں تعمیر نو اور معاشی ترقی کے فروغ کے لئے بامعنی شرکت پائیدار امن واستحکام کو یقینی بنانے کے لئے اہم ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ زاہد حفیظ چوہدری نے کہا  پاکستان سمجھتا ہے کہ افغانستان میں پائیدار امن واستحکام کے لئے کوششوں میں ایک اور کلیدی پہلو ایک متعین اور مطلوبہ وسائل کے ساتھ تیار کردہ پلان ہونا چاہئے جس کے تحت افغان مہاجرین کی اپنے گھروں کو باعزت واپسی اور افغانستان میں ان کی معاشرے میں دوبارہ شمولیت ممکن ہوسکے۔ پاکستان افغانستان میں پائیدار امن واستحکام کے لئے عالمی برادری کے ساتھ مل کر کوششیں جاری رکھے گا۔ 


ای پیپر