ملزم شفقت علی نے موٹروے زیادتی کیس کی ہولناک تفصیلات بتا دیں
14 ستمبر 2020 (19:31) 2020-09-14

لاہور : ملزم شفقت علی نے موٹروے زیادتی کیس کی ہولناک تفصیلات بتا دیں ، ملزم نے پولیس کے سامنے خاتون سے زیادتی کا اعتراف کر لیا ۔

تفصیلات کے مطابق   پولیس نے پہلے سے گرفتار ملزم وقار الحسن کی نشاندہی پر ایک اور ملزم شفقت علی لو گرفتار کیا تھا، شفقت علی کی عمر 23سال ہے جو مرکزی ملزم عابد علی کا قریبی ساتھی ہے۔پولیس نے گذشتہ رو ز شفقت علی کو دیپالپور سے گرفتار کیا تھا۔

ملزم نے پولیس کے سامنے خاتون سے زیادتی کا اعتراف کر لیا ہے۔پولیس کا کہنا ہے کہ ضلع بہاولنگر تحصیل ہارون آباد کا رہائشی ہے پنجاب میں مختلف گینگز کے ساتھ منسلک رہے ہیں شفقت علی اور اس کا خاندان پہلے بھی جرائم میں ملوث رہا ہے۔ ملزم شفقت علی نے عابد کے ساتھ مل کر 11 وارداتیں کیں۔ ملزم شفقت علی نے پولیس کو دئیے گئے اعترافی جرم میں بتایا ہے کہ میں نے اور عابد نے مل کر موٹروے پر ڈکیتی کی تھی۔

واقعے کا مرکزی ملزم عابد علی جرائم میں میرا ساتھی ہے۔پہلے ہم نے ڈکیتی کی،بعدازاں خاتون کو زیادتی کا نشانہ بنایا۔پولیس کا مزید کہنا ہے کہ شفقت علی بھی عادی مجرم رہا ہے،ماضی میں بھی ایسے جرائم کا مرتکب رہا ہے۔واضح رہے کہ پولیس نے نامزد ملزم وقار الحسن کی نشاندہی پر 23سالہ ملزم شفقت کو گزشتہ رات دیپالپور سے گرفتار کیا تھا۔ شفقت کا تعلق بہاولنگر کی تحصیل ہارون آباد کا رہائشی ہے۔

ملزم شفقت کا ڈین این اے بھی میچ کرگیا ہے۔ پولیس تحقیقات کے دوران شفقت نے خاتون سے زیادتی کا اعتراف کرلیا ہے۔ پولیس نے وقار الحسن کی سالے عباس نے بھی گرفتاری دے دی ہے۔ عباس کے زیراستعمال وقار الحسن کی سم چل رہی تھی۔ وقار الحسن کی والدہ نے بتایا کہ ان کے بیٹے کی قلعہ ستار شاہ میں موٹر سائیکل مرمت کی دکان ہے، وقار کی 4 بیٹیاں اور 2 بیٹے ہیں۔ حکومت سے اپیل ہے کہ میرے بیٹے کو انصاف فراہم کیا جائے۔


ای پیپر