موٹروے زیادتی کیس: ملزم عابد ملہی کی تصاویر سامنے آ گئیں
14 اکتوبر 2020 (10:32) 2020-10-14

لاہور: موٹروے زیادتی کیس کے مرکزی ملزم عابد ملہی کی یہ تصاویر گرفتاری کے وقت اتاری گئی تھیں۔ ملزم انتہائی چالاکی سے پولیس اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کو چکمہ دیتا رہا۔ پولیس نے اسے متعدد مرتبہ گرفتار کرنے کی کوشش کی لیکن وہ ہر مرتبہ فرار ہونے میں کامیاب ہوتا رہا۔ تاہم گزشتہ دنوں اسے بالاخر گرفتار کر لیا گیا۔

ملزم عابد ملہی نے پولیس سے چھپنے کیلئے اپنا حلیہ بھی تبدیل کر لیا تھا جسے حالیہ تصاویر میں دیکھا جا سکتا ہے۔ عابد ملہی کو موٹروے واردات کے ایک ماہ اور 3 دن بعد گرفتار کیا گیا تھا۔ تاہم ملزم کے والد اکبر علی نے ویڈیو بیان میں دعویٰ کیا ہے کہ عابد شام ساڑھے 6 بجے مانگا منڈی میں گھر آیا تھا، اس کے گھر آنے پر ہم نے خود پولیس کو اطلاع کی۔

اکبر علی نے دعویٰ کیا کہ عابد کو مقامی شہری خالد بٹ کی موجودگی میں پولیس کے حوالے کیا۔ ملزم کے والد نے میڈیا کے سامنے حکام سے مطالبہ کیا کہ عابد ملہی گرفتار ہو چکا ہے، اب ہماری خواتین کو بھی رہا کیا جائے۔

خیال رہے کہ گذشتہ روز موٹروے ریپ کے مرکزی ملزم عابد ملہی کو پولیس کی جانب سے گرفتار کرنے کا دعویٰ کیا گیا تھا۔ پولیس کے مطابق ملزم کی گرفتاری کیلئے سائنٹیفک طریقے بھی استعمال کیے۔ وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے ملزم کو گرفتار کرنے والی ٹیم کیلئے 50 لاکھ روپے انعام کا اعلان بھی کیا ہے۔

ادھر موٹروے زیادتی کیس کے مرکزی عابد ملہی کو شناخت پریڈ کیلئے چودہ روزہ جوڈیشل ریمانڈ پر جیل منتقل کر دیا گیا ہے۔ شریک ملزم شفقت بھی 28 اکتوبر تک پولیس کی تحویل میں ہوگا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ملزم عابد نے خاتون سے زیادتی سمیت 50 وارداتوں کا اعتراف کر لیا ہے۔

خیال رہے کہ خاتون سے جنسی زیادتی کا افسوسناک واقعہ گزشتہ ماہ 9 ستمبر کو لاہور کے علاقے گجرپورہ میں موٹر وے پر پیش آیا تھا۔


ای پیپر