بلوچستان یونیورسٹی میں طلباء کی خفیہ نازیبا ویڈیوز
14 اکتوبر 2019 (18:39) 2019-10-14

کوئٹہ : بلوچستان یونیورسٹی میں طلباء کی خفیہ کیمروں کے ذریعے نازیبا ویڈیوز بنانے کا انکشاف ہوا ہے، ویڈیوز بنانے پر وائس چانسلر کے سٹاف آفیسر کو بھی سیکیورٹی حکام نے گرفتار کرلیا ہے۔

 ایف آئی اے حکام کے مطابق یونیورسٹی کے سیکیورٹی اور سرویلنس سیکشن انچارج کو گرفتار کیا گیا ہے جبکہ 200سے زائد سٹاف سے تفتیش بھی جاری ہے،ترجمان بلوچستان حکومت نے واقعہ میں ملوث افراد کو نشان عبرت بنانے کا فیصلہ کیاہے۔ بلوچستان یونیورسٹی میں طلباء کو بلیک میل اور ہراساں کرنے کا انکشاف ہوا ہے، ایف آئی اے کے مطابق یونیورسٹی سیکیورٹی برانچ افسر اور سرویلنس انچارج کو بھی اس معاملے میں گرفتار کرلیا گیا ہے۔

بلوچستان یونیورسٹی کے سیکیورٹی اور سرویلنس سیکشن کے اہلکاروں نے طالبات کو بلیک میل کیا جبکہ یونیورسٹی میں خفیہ کیمرے کی مدد سے ان کی ویڈیوز بنائی گئیں۔ ایف آئی اے حکام کے مطابق گرفتار اہلکاروں سے ہراساں اور بلیک میلنگ کی ویزیوز بھی برآمد کرلی گئی ہیں۔بلیک میل کئے گئے طلباء میں زیادہ تعداد طالبات کی ہے۔

 ایف آئی اے کی کاروائی کے بعد کئی متاثرہ لڑکیوں نے رجوع کیا ہے جبکہ اس معاملے پر یونیورسٹی کے اعلیٰ عہدیداروں کے ملوث ہونے پر بھی تفتیش جاری ہے۔ دوسری جانب ترجمان بلوچستان حکومت لیاقت شاہوانی نے رد عمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ تعلیمی اداروں میں ایسے واقعات سے طالبات میں خوف پھیلتا ہے جبکہ حکومت بلوچستان ایسے واقعات کو برداشت نہیں کر سکتی۔


ای پیپر