ہم جمہوری انداز میں احتجاج کریں گے:مولانا فضل الرحمن
14 نومبر 2019 (17:07) 2019-11-14

اسلام آباد: جمعیت علماءاسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ نواز شریف سے گارنٹی مانگنا بد اخلاقی کا مظاہرہ ہے، نواز شریف کو علاج کےلئے باہر جانے دیا ،تمام بڑی شاہراہوں پر کارکن جمع ہورہے ہیں ، کارکنوں کو شہریوں کو تنگ نہ کرنے کی ہدایت کی ہے، یہ استعفیٰ دے دیتے تو پورے ملک میں احتجاج نہ ہوتا۔

اس موقع پر چوہدری شجاعت حسین نے کہا کہ ہم مبارکباد دینے کےلئے آئے تھے، ہم چاہتے ہیں کہ ایسا نظام ہو جو عوام کی توقعات پر پورا اترے، سپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویزالٰہی نے کہا کہ یہ واحد دھرنا تھا جس میں ذمہ داری کا مظاہرہ کیا گیا۔

جمعرات کو میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سابق وزیراعظم چوہدری شجاعت حسین نے کہا کہ ہم مبارکباد دینے کےلئے آئے تھے، ہم چاہتے ہیں کہ ایسا نظام ہو جو عوام کی توقعات پر پورا اترے، مولانا فضل الرحمان جمہوریت پسند انسان ہیں۔ اس موقع پرمیڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے سپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویزالٰہی نے کہا کہ مولانا فضل الرحمان کی قیادت میں بڑا دھرنا دیا گیا، مولانا فضل الرحمان اب پاکستان کے واحد اپوزیشن لیڈر ہیں، مولانا فضل الرحمان کے پیچھے تمام جماعتیں کھڑی ہیں، یہ واحد دھرنا تھا جس میں ذمہ داری کا مظاہرہ کیا گیا۔

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے جمعیت علماءاسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا کہ سابق وزیراعظم نواز شریف سے گارنٹی مانگنا بد اخلاقی کا مظاہرہ کیا جا رہا ہے، نواز شریف کو علاج کےلئے باہر جانے دیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ ملک بھر میں اجتماعات کا سلسلہ شروع ہو گیا ہے، تمام بڑی شاہراہوں پر کارکن جمع ہورہے ہیں ، کارکنوں کو شہریوں کو تنگ نہ کرنے کی ہدایت کی ہے، ہم جمہوری انداز میں احتجاج کریں گے، یہ استعفیٰ دے دیتے تو پورے ملک میں احتجاج نہ ہوتا۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے پر امن دھرنا دیا اور قوم کی جنگ لڑ رہے ہیں، ٹماٹر 300روپے کلو ہو تو عام آدمی کیا چیز خریدے گا۔


ای پیپر