Shibli Faraz, Federal Minister, Chairman Senate Election, Yousaf Raza Gillani, PDM, Saeed Ghani
14 مارچ 2021 (11:51) 2021-03-14

اسلام آباد: وزیر تعلیم سندھ سعید غنی نے کہا ہے کہ شبلی فراز وزیر جھوٹی اطلاعات بھی نہیں رہے ،شبلی فراز نے 12 مارچ صبح 10 بجے دوسری مرتبہ سینیٹر کا حلف لیا وزارت کا نہیں ۔

سعید غنی نے کہا کہ 11 مارچ رات 12 کے بعد شبلی فراز غیر آئینی طور پر وزارت سے چمٹے ہوئے ہیں ، انہوں نے کہا کہ میرے عاق شدہ دوست شبلی فراز 11 مارچ رات 12 بجے کے بعد سینیٹر نہیں تھے ۔

گزشتہ روز میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیر تعلیم سندھ نے شبلی فراز پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ تھا وفاقی وزیر چیئرمین سینیٹ کے الیکشن سے پہلے یہ اعلان کر چکے تھے کہ حکومت اس الیکشن کو جتنے کیلئے ہر ہربہ استعمال کرے گی اور انہوں نے کیا ۔

سعید غنی نے مزید کہا کہ ہمارے 7 ووٹ درست تھے جن کو مسترد کیا گیا ، سات نشانات یوسف رضا گیلانی کے بکس اور نام پر لگے تھے ، جان بوجھ کے ووٹ مسترد کرنے کے تاثر کو رد کرتا ہوں ۔ ووٹ مسترد ہونے پر عدالت سے رجوع کریں گے ۔

انہوں نے کہا کہ ہمارے ووٹرز نے دیانتداری سے پارٹی ہدایت کے مطابق ووٹ دیا ، طریقہ کار درج تھا ، تحریری ہدایات موجود تھیں اس کے مطابق ووٹ دیا گیا ۔ انہوں نے کہا کہ اگر ووٹر کو ووٹ مسترد کرانا ہوتا تو وہ بیلٹ پیپر کو خالی چھوڑ آتا یا ووٹرز کو ووٹ ضائع کرنا ہوتا تو وہ دونوں امیدواروں کو ووٹ ڈالتے ۔

صوبائی وزیر کا کہنا تھا کہ مظفر شاہ صاحب کا لہجہ رعونت والا تھا ، مظفر شاہ نے بددیانتی پر مبنی غیرقانونی رولنگ دی ، مظفر شاہ نے ہارے ہوئے صادق سنجرانی کو زبردستی کامیاب قرار دیا ۔ صوبائی وزیر نے کہا کہ مظفر شاہ کو فون کے علاوہ بھی بہت کچھ آیا ہوگا ، فون پر اتنی تابعداری نہیں ہوسکتی ۔

وزیر تعلیم سندھ نے کہا کہ رات کے اندھیرے میں کیمرے لگ سکتے ہیں تو بیلٹ پیپر میں بھی گڑبڑ ہوسکتی ہے ۔ سعید غنی نے کہا کہ شبلی فراز نے کہا تھا کہ سینیٹ الیکشن جیتنے کیلئے ہر حربہ استعمال کریں گے ، ان کا لہجہ بتارہا تھا کہ حکومت ہر حال میں سینیٹ الیکشن جیتنا چاہتی ہے ۔


ای پیپر