George Floyd's murder case, the victim's family made a multi-million dollar deal with the authorities
کیپشن:   فائل فوٹو
14 مارچ 2021 (10:20) 2021-03-14

واشنگٹن: امریکی میڈیا کے مطابق سیاہ فام باشندے جارج فلائیڈ کے لواحقین نے پیسوں کے عوض حکام کیساتھ مقدمے کی ڈیل کر لی ہے۔ اس ڈیل کے تحت انھیں 27 ملین ڈالرز ادا کئے جائیں گے۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق اس سلسلے میں جارج فلائیڈ کے اہلخانہ اور سٹی کونسل کے درمیان تحریری معاہدہ ہو چکا ہے۔ خیال رہے کہ امریکی سیاہ فام کو قتل کرنے والے پولیس اہلکار کیخلاف 29 مارچ سے ٹرائل شروع ہو رہا ہے۔

خیال رہے کہ امریکی ریاست منی سوٹا میں یہ تاریخ کا سب سے بڑا تصفیہ ہے جس میں کسی بھی مقتول لواحقین کو اتنی بھاری رقم ادا کرنے کا معاہدہ کیا گیا ہے۔ اس معاہدے کی منظوری سٹی کونسل نے خصوصی طور پر دی ہے۔

اس سلسلے میں جارج فلائیڈ کے وکلا کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ اس تاریخی تصفیے نے دنیا کو ایک پیغام دیا ہے کہ امریکا میں رہنے والے سیاہ فاموں بھی عزت وقار رکھتے ہیں، اور ان کیخلاف معاشرے میں جاری تعصب ختم ہونا چاہیے۔

ذہن میں رہے کہ گزشتہ سال امریکی ریاست منی سوٹا میں پولیس نے سیاہ فام شہری جارج فلائیڈ کو ناکردہ جرم کی سزا دیتے ہوئے اسے گرفتار کیا، اسی دوران ایک پولیس اہلکار نے اس کی گردن پر اپنا گھٹنا رکھ دیا۔ اس موقع پر شہری چلاتا رہا کہ اس کا دم گھٹ رہا ہے کہ لیکن اس کی کوئی بات نہ سنی گئی، بالاخر اسی تشدد سے اس کا دم گھٹ گیا۔

پولیس کے ہاتھوں سیاہ فام کے قتل کے بعد پورے امریکا میں مظاہرے شروع ہو گئے تھے، ان مظاہروں کو بلیک لائیو میٹر کا نام دیا گیا تھا۔


ای پیپر