امریکہ ،پولیس کا پھر تشدد،مظاہرے پھوٹ پڑے
14 جولائی 2020 (20:27) 2020-07-14

واشنگٹن :پنسلوانیا پولیس کے ایک اہلکار کی ہسپتال کے باہر آدمی کے سر اور گردن پر گھٹنے رکھنے کی ویڈیو سے مظاہرے بھڑک اٹھے ہیں اور واقعے کی تحقیقات کا عمل جاری ہے۔ یہ بات مقامی میڈیا نے بتائی۔

پنسلوانیا کے تیسرے گنجان آباد شہر ایلن ٹان میں ہفتے کی رات کو عکس بند کی گئی 39 سیکنڈ کی ویڈیو میں تین اہلکاروں کو ایک آدمی کو جکڑے ہوئے دیکھا جا سکتا ہے جو زمین پر لیٹا ہوا ہے اور چیخ رہا ہے جبکہ ایک اہلکار اپنا گھٹنا اس آدمی کی گردن اور سر کے حصے میں رکھ رہا ہے۔ایلن ٹان پولیس نے اتوار کے روز کہا کہ افسران سے سامنا ہونے کے بعد اس شخص نے چیخنا اور اہلکاروں اور ہسپتال کے عملہ پر تھوکنا شروع کر دیا۔

ایلن ٹان پولیس کی جانب سے بعد میں جاری ہونیوالی ایک زیادہ طویل نگرانی ویڈیو میں بتایا گیا ہے کہ اہلکار نے 2 بار اپنے گھٹنے کا استعمال کیا پہلی بار 8 سیکنڈ کیلئے ، دوسری بار 20 سیکنڈ کیلئے۔پیر کے روز ایلن ٹان پولیس نے ایک بیان میں کہا کہ وہ واقعے میں ''طاقت کے استعمال" کی تحقیقات کر رہے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ مقامی ضلعی اٹارنی کے ذریعے تحقیقات کا جائزہ لیا جائے گا۔پیر کی رات سینکڑوں افراد ایلن ٹان شہر میں محکمہ پولیس دفتر کے باہر جمع ہوئے۔

انہوں نے کتبے اٹھا رکھے تھے اور انہوں نے اس افسر کو برطرف کرنے اور پولیس فنڈ کو تعلیم ، ذہنی صحت اور دیگر معاشرتی خدمات کو دینے کا مطالبہ کیا۔مقامی میڈیا کے مطابق ایلن ٹان کے میئر رائے اوکونل نے کشیدگی کم کرنے کے لئے پولیس عمارت کے باہر موجود مظاہرین سے ملاقات اور بات چیت کی۔یہ واقعہ مئی میں پولیس تحویل میں سیاہ فام شخص جارج فلائیڈ کے قتل کیخلاف ملک گیر احتجاج کے دوران پیش آیا ہے۔


ای پیپر