Source : Yahoo

نواز شریف اور مریم نواز کی جیل کا احوال
14 جولائی 2018 (17:53) 2018-07-14

راولپنڈی:ایون فیلڈ ریفرنس میں مجرم سابق وزیراعظم نواز شریف اور مریم نواز نے رات اڈیالہ جیل میں گزاری، صبح سویرے دونوں باپ بیٹی کوچائے پراٹھے اور انڈے کا ناشتہ پیش کیا گیا لیکن نوازشریف اور مریم نے صرف چائے پر ہی اکتفاکیا جبکہ مریم نواز نے سہالہ ریسٹ ہاﺅس جانے سے انکار کردیا ، والد کیساتھ رہنے کی خواہش ظاہر کردی۔

دوسری طرف مریم نواز نے اپنے ایک خط میں لکھا کہ مجھے بہتر سہولیات کیلئے سپرٹنڈنٹ جیل کو کہنے کیلئے کہا گیا جس کے جواب میں ہم نے انکار کر دیا اور کہا کہ مجھے بہتر سہولیات کی ضرورت نہیں ،مریم نواز کی ٹیم نے مریم نواز کا خط کا سوشل میڈیا پر وائر ل کر دیا ۔

تفصیلات کے مطابق جمعہ کی رات گرفتاری کے بعد نواز شریف اور مریم نواز کو جج احتساب عدالت کے روبرو پیش کیا گیا تھا جہاں جج محمد بشیر نے مجرموں کو جیل منتقل کرنے کے احکامات جاری کیے، جیل منتقلی کے بعد ڈاکٹروں کی خصوصی ٹیم بھجی گئی، جس نے نواز شریف اور مریم نواز کا میڈیکل چیک اپ کیا جس کے بعد نوازشریف اور مریم نواز کو اڈیالہ جیل میں رات گزارنا پڑی۔صبح ہوئی تو جیل حکام کی جانب سے سابق وزیراعظم نوازشریف اور مریم نواز کو چائے ، پراٹھے اور انڈے کا ناشتہ پیش کیاگیا تاہم دونوں باپ بیٹی نے صرف چائے پر اکتفا کیا ۔ نواز شریف، مریم نواز اور محمد صفدر کو ایک ہی کمپانڈ میں رکھا گیا ہے مگر تینوں کے کمرے الگ الگ ہیں تاہم وہ ایک دوسرے سے ملاقات کرسکتے ہیں۔

دوسری جانب جیل رول کے مطابق سابق وزیراعظم میاں نوازشریف کو بی کیٹیگری الاٹ کی جائے گی، میاں نوازشریف کرسی میزسے لے کرروم کولر تک اپنے پیسوں سے خریدیں گے جب کہ میاں نوازشریف بیڈ، میٹرس، جائے نماز، وہیل چیئرسمیت دیگر سہولیات استعمال کرسکتے ہیں۔

جیل ذرائع کے مطابق مریم نوازکو دوپہر کا کھانا پیش کیاگیا لیکن انہوں نے جیل کا کھانا نہیں کھایا تاہم انہوں نے دوپہرکے کھانے میں اسنیکس کھائےاورجوس پیا۔ جب کہ نواز شریف نے بھی دوپہر کے کھانے کے بجائے کچھ پھل کھائے اورجوس پیا۔

دوسری جانب ن لیگی ذرائع نے بتایا کہ مریم نواز نے والد کو جیل بھیجنے اور خود سہالہ پولیس ٹریننگ کالج ریسٹ میں پہنچائے جانے کی سختی سے مخالفت کی اور سرکاری حکام پر واضح کیا وہ اپنے والد کو اکیلے جیل میں چھوڑ کر خود سہالہ پولیس ٹریننگ کالج ریسٹ ہاوس نہیں جا سکتیں ۔ذرائع کے مطابق سرکاری حکام نے آگاہ کیا کہ مریم نواز کو بینظیر بھٹو شہید اور ان کی والدہ نصرت بھٹو کی طرح سہالہ ریسٹ ہاس میں قید رکھا جائے گا اور نواز شریف کو اڈیالہ جیل میں رکھا جائے گا اس پر ن لیگ کے رہنما کے مطابق مریم نواز نے دو ٹوک الفاظ میں کہا کہ وہ اپنے والد میاں محمد نواز شریف سے جدا ہو کر ریسٹ ہاﺅس میں کسی قیمت پر جانے کو تیار نہیں ہیں۔


ای پیپر