لاہور ہائیکورٹ سے جگنو محسن کی نااہلی کے حوالے سے بڑی خبر
14 جنوری 2019 (20:41) 2019-01-14

لاہور : لاہور ہائیکورٹ کے الیکشن ٹربیونل نے پی پی 184 اکاڑہ سے مسلم لیگ (ن) کی رکن پنجاب اسمبلی سیدہ مومنات محسن عرف جگنو محسن کی نااہلی کے لیے دائر الیکشن پٹیشن کے قابل سماعت ہونے یا نہ ہونے سے متعلق فیصلہ محفوظ کر لیا۔

مسٹر جسٹس چوہدری محمد اقبال پر مشتمل الیکشن نے ناکام امیدوار سید رضا گیلانی کی الیکشن پٹیشن پر سماعت کی ۔درخواست گزار کی جانب سے وقار اے شیخ ایڈووکیٹ نے موقف اپنایا کہ سیدہ مومنات نے الیکشن لڑتے وقت گوشوارے چھپائے اور اپنی زرضی اراضی کا بھی ذکر نہیں کیا جس کی وجہ سے وہ آرٹیکل 62۔63کی اہل نہیں رہیں ۔

لہٰذا معزز عدالت سے استدعاہے کہ سیدہ مومنات کی کامیابی کے نوٹیفیکیشن کوکالعدم قرار دیکر حلقہ میں دوبارہ الیکشن کروانے کا حکم دیا جائے ۔جبکہ رکن پنجاب اسمبلی جگنو محسن کی طرف سے خالد اسحاق ایڈووکیٹ نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ الیکشن پٹیشن اور بیان حلفی اوتھ کمشنر کی تصدیق کے بغیر دائر کی گئی ایسے میں الیکشن پٹیشن قابل سماعت نہیں ہے ۔

الیکشن ٹربیونل نے دلائل سننے کے بعد الیکشن پٹیشن کے قابل سماعت ہونے یا نہ ہونے سے متعلق فیصلہ محفوظ کر لیا۔


ای پیپر